اردو ادب


زبان(the-language)

زبان

زبان وسیلۂ اظہار تو ہے ہی کہ مدعا بیان کرے ہے تو کبھی حالِ دل نوکِ زباں پر لانے سے گریز پا ہو کر وہ سب ظاہر کر دے ہے جو ’کاش پوچھو کہ مدعا کیا ہے‘ در حقیقت مدعا بیان کرنے کے بعد کہا جائے ہے۔ ورنہ غالب جیسے زبان داں کو مدعا پوچھنے کی حاجت ! وہ تو ’اس ‘ کی زبانِ حال سے وہ کہلوانا چاہتے ہیں جو کہ خود سننے کے مشتاق ہیں۔

کتاب(the-book)

کتاب

23 اپریل کا دن’ کتاب کا عالمی دن‘(World Book Day)کے طور پر منایا جاتا ہے۔ اقوامِ عالم اپنے بچوں میں کتب بینی کا شوق اور کتاب سے لطف اندوز ہونے کی حِس پیدا کرنے کے آرزو مند ہیں اور اس دن کو منانے کا یہی بنیادی مقصد ہے۔ پاکستان میں یہ دن نہیں منایا جاتا کیونکہ ہم اپنے بچوں میں کتاب جیسی لغو چیز سے اُنسییت پیدا کرنا نہیں چاہتے۔ ہمیں اپنے بچوں اور اگلی نسلوں سے کتب بینی سے زیادہ اہم اور دائمی منافع بخش کام لینے ہیں کہ یہ دنیا فانی ہے۔ 23 اپریل کا دن عالمی لٹریچر کا علامتی دن ہے کہ اسی تاریخ کو دنیا کے نامور لکھاری اور شاعر دنیا سے منتقل ہوئے، یعنی انتقال پا گئے جیسے ولیم شیکسپئیر، ما گوئیل ڈی سروانٹس، ولیم ورڈز ورتھ اور بہت سے نابغۂ ر وزگار دانشور، اہلِ قلم وغیرہ۔


ارے بولو توکچھ بھائی(a-poem)

ارے بولو توکچھ بھائی

ایک مزدور

ذرا سا شور گر کم ہو
یہاں چلتی مشینوں کا
تو پوچھوں تم سے میں بھائی
سنا ہے آج ہی میں نے
کسی پنج تارہ ہوٹل میں
یہ زیرِغور تھا عُقدہ
کہ مزدورں کی حالت کو
انھوں نے اب بدلنا ہے
تمہاری میری قسمت نے
بہر سُو اَب سنورنا ہے

کہاں میں رُکتا؟(a-poem)

کہاں میں رُکتا؟

کہاں میں رُکتا .......کہ سدرۃ المنتہی سے اونچا تو کچھ نہیں تھا!

چڑھائی مشکل تھی ...
آسماں گیر ہاتھ اونچے اُٹھے ہوئے
پاؤں آگے بڑھتے
لپکتے، رستوں کو ماپتے ، سیڑھی سیڑھی چڑھتے
بدن تموج میں ایسے حرکت پذیر
جیسے کہ تیرتا ہو!
 

Praise and prayers for the great people of Turkey

One year ago, this day, the people of Turkey set an example by defending their elected government and President Recep Tayyip Erdogan against military rebels.

Read more

loading...