کالم و مباحث (مسعود مُنّور)

  وقت اشاعت: 4 دن پہلے 

معروف ٹی وی اینکر ڈاکٹر شاہد مسعود المعروف دبڑ دُوس ، ڈاکٹر کم اور مولوی زیادہ ہیں اور پُورے تزک و احتشام سے اپنی مولویت میں رہتے ہیں ۔ وہ ایک عرصے سے وقت کے خاتمے پر تحقیق کر رہے ہیں اور اس سلسلہ میں اُن کی کتاب " دی اینڈ آف ٹائم" بھی شائع ہو چکی ہے ۔ اس بار رمضان کے دوران اُن کا " دی نیوز ون" پر چلنے والا  رمضان شو ، جس میں انعامات کی بارش ہوئی  اور عمروں کے ٹکٹوں کے تحفے تقسیم کیے گئے، بہت مقبول ہوا ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 18 جون 2017

پاکستان میں کامیاب بزنس مین بننے کے لیے اقتدار میں ہونا ضروری ہے یا پھر بطور سیاستدان اتنا موثر ہونا لازمی ہے جتنے مولانا فضل الرحمان، تاکہ شیر کے مونہہ سے اپنے حصے کا نوالہ چھینا جا سکے ۔ رزق یقیناً خُدا تعالیٰ کی طرف سے ہے لیکن اُس کی تقسیم کا ذمہ اور اختیار انسانوں کو دیا گیا ہے۔  اور انسان چاہیں تو خُدا کے اُتارے ہوئے رزق کو ، اُس کی عطا اور امانت سمجھ کر اُس کی رضا  کے لیے اور شریعت کے قانون کے مطابق خرچ کریں یا اسراف کرنے والوں کی طرح اللہ کے عطا کردہ رزق کو اپنے اللوں تللوں کی مد میں گل چھرے اُڑا کر حرام میں گنوا دیں ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 10 جون 2017

مذہب زندگی کا روڈ میپ ہے ۔ یہ خُدا کاقانون ہے جس کا ظاہر شریعت اور باطن محبّت ہے ۔
ہم مذہب اس لیے اختیار کرتے ہیں ، تاکہ محبّت کرنا سیکھ سکیں اور محبّت اس لیے کرتے ہیں  تاکہ مذہب کی حقیقت پوری تفصیل کے ساتھ جان سکیں  ۔ زندگی کو محبت کے سوا کسی رہنمائی یا سبق کی ضرورت نہیں  ۔
لیکن یہ کون ہے جو محبت کا سزاوار ہے ۔ اِس کو جاننے ، محبوب کو پہچاننے اور کسی بھی گمرہی سے بچنے کے لیے استاد جلال الدین رومی نے ایک اشارہ دیا ہے ۔ فرماتے ہیں :
سورہ ء رحماں بخواں اے مبتدی

مزید پڑھیں

loading...

  وقت اشاعت: 03 جون 2017

عجیب مخمصہ ہے ۔ نظریے کا خار زارعبور کر کے ستر برس قبل  ہم پاکستان آئے اور   آج ستر برس بعد بھی  پاکستان کی تلاش میں ہیں ۔ وہ ملک  ہے کہاں جو ایک قوم  نے برِ صغیر  ہند میں مذہب کی بنیاد پر  حاصل کیا تھا ۔ جس کا مطلب ایک نعرے میں لا الہ الاللہ بیان کیا گیا تھا ۔ کیا یہ سڑکوں کے جال ، یہ  اوررنج بسیں ،  یہ لوڈ شیڈنگ کے خلاف احتجاج کرتے غریب مسلمان  کسی خوش حال معیشت اور مستحکم قومی روایت کی علامات ہیں ۔ کیا یہی ہے وہ پاکستان؟

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 29 مئی 2017

آج جس وقت یہ سطور لکھی جا رہی ہیں ، ناروے میں پہلا اور دوسرا روزہ ہے ۔ یہاں بھی مُفتی پوپلزئی کے پیروکاروں نے ایک دن پہلے روزہ رکھا اور کچھ پاکستانی مزاج مُنیبی  مسلمانوں کا پہلا روزہ رہا ۔ رمضان کی آمد پر ناروے کی وزیر اعظم  محترمہ ایرنا سولبرگ  کی رمضان  کی مبارک باد نیک خواہشات کے ساتھ  فیس بُک پر موصول ہوئی تو  دل کو تسلی ہوئی کہ اس دیارِ غیر میں ، جسے ہم اپنا قرار دے چکے ہیں ،  سبھی نارویجین مسلمانوں پر امن کا سایہ ء خُدا ئے ذوالجلال ہے۔ اور ہم یہاں پاکستان ، بنگلہ دیش  اوربھارت  کے مُسلمانوں سے زیادہ محفوظ ہیں ۔

 

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 23 مئی 2017

خُود کُش دھماکے دوزخ کا عذاب ہیں اور خود کُش جیکٹیں ، گندھک کے وہ کُرتے ہیں ، جن کا ذکر قرآنِ کریم میں آیا ہے کہ وہ گناہگاروں کا لباس ہیں مگر تعجب تو اس بات کا ہے کہ ہم ، جنہیں ناظرہ کے ثواب پر لگادیا گیا ہے ، اسلام کی حقیقی تفہیم اور طرزِ زندگی سے عملاً محروم ہو گئے ہیں ۔ گزشتہ رات جن لوگوں نے مانچسٹر کے ایک کنسرٹ میں دھماکہ کرکے بائیس افراد کو ہلاک اور بیسیوں کو زخمی کردیا ہے ، اسلام کی کیا خدمت کی ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 15 مئی 2017

مذہب کے نام پر مُلک بنانا اور پھر اُس میں مذہب کو مسخ کرکے اُس کے گوناگُوں بلکہ " ون سونّے "  ایڈیشن تیار کرکے رائج کرنا اور خُدا اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے نام پر قتل کو روا سمجھنا بہت مشکل کام ہیں لیکن ہم نے اُنہیں بہت آسانی سے کر دکھایا ہے ۔ ہتھیلی پر سرسوں جمائی ہے اور گنجے سروں پر گندم کاشت کی ہے ۔ ہیں ناں ہم اس عہد کے معجز نُما لوگ ؟

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 08 مئی 2017

آدم و حوّا زاد ایک سایئکو سومیٹک مخلوق ہے ۔  اس کا نفسی خلل ، ذہنی پریشر یا داخلی تصادم  اُس کے قویٰ اور ظاہر ی وجود پر اپنا اثر مرتب کرتا ہے  اور اُس کا گوشت پوست کا ڈھانچہ اُس کی باطنی کشمکش کی تصویر بن کر رہ جاتا ہے ۔ اس سلسلے میں قرآن نے واضح کیا کہ :
" یعرفون المجرمون بسیمٰھم  فیوخذ بالنواصی والاقدام " سورہ الرحمٰن ۔ آیت اکتالیس

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 29 اپریل 2017

فیلڈ مارشل ایوب خان نے اپنے دور اقتدار میں بنیادی جمہوریتوں کا نظام متعارف کروایا تھا ، جس میں ایک الیکٹورل کالج کے ذریعے صدارتی انتخاب ہوتا تھا  ۔ یہ الیکٹورل کالج بنیادی جمہوریت کے ان ارکان پر مشتمل ہوتا تھا جنہیں پنچایت ، میونسپل کمیٹی اور میونسپل کارپوریشن کی سطح پر عام ووٹر چنتا تھا ۔ ان لوگوں تک حکومتی  رسائی نسبتاً  سہل تھی ۔ ان بی ڈی ممبروں کو خریدنا  بھی آسان تھا اور  متاثر کرنا بھی ۔ چنانچہ جمہوریت کے نام پر فردِ واحد کی حکمرانی کا یہ کامیاب ترین نسخہ تھا کہ جمہوریت کا  سانپ بھی مر جائے اور آمریت کی لاٹھی بھی نہ ٹُوٹے ۔ یہ نظام بالواسطہ جمہوریت کا نظام کہلاتا تھا لیکن اسی نظام میں اگر تلا سازش کیس  چلا اور مشرقی پاکستان کی علیحدگی کی بنیاد پڑی کیونکہ یہ نظام جمہوریت کے نام پر بد ترین شخصی آمریت کا نظام تھا ۔  اور بالآخر یہ اپنی موت مرگیا ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 23 اپریل 2017

تین روز پہلے  ویژن فورم کے سربراہ قبلہ ارشد بٹ کی طرف سے اطلاع ملی کہ اوسلو میں مشال خان کے قتل پر مجلسِ عزا ہوگی ۔ اور کل یارِ ہم مشرب  حضرت نثار بھگت نے فون پر اس کی تفصیل بتائی ۔ یعنی جو قتل مردان کی عبد الولی خان یونی ورسٹی میں ہوا ہے اُس کا سوگ چار دانگِ عالم میں ہو رہا ہے ۔ سو جن دوستوں نے اس سفاکانہ قتل کی مذمت کا بیڑا اُٹھایا ہے ، وہ جانتے ہیں کہ صرف پاکستانی معاشرہ ہی نہیں  ، پورا عالمِ اسلام قتل و غارت گری اور  سفاکی و بربریت کے دوزخ میں جل رہا ہے ۔

مزید پڑھیں

Conflicts in Conflict

The conflict of Jammu and Kashmir (J&K) is one of the long standing issues of the world. The unfortunate but this unique multi-ethnic, multilingual and multi-religious po

Read more

loading...