مباحث (158)

  وقت اشاعت: 4 دن پہلے 

جب سے گلوبل وارمنگ ( اردو میں عالمی گرمائش) کا سلسلہ شروع ہوا ہے نہ صرف گرمی کی شدت میں اضافہ ہوا ہے بلکہ  ہر سال گرمیوں کا  دورانیہ بھی بڑھ جاتا ہے۔  جیسا کہ نومبر کا دوسرا عشرہ ختم ہونے والا ہے مگر ان دنوں جس شدت کی سردی ہوا کرتی تھی اب نہیں ہے۔  کیونکہ اب موسم  بدل رہا ہے۔  دن چھوٹے اور راتیں طویل ہوتی جارہی ہیں۔ 

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 6 دن پہلے 

پاکستان کے خراب ہوتے ہوئے حالات عام آدمی کی زندگی کو اجیرن کئے ہوئے ہیں۔  ان حالات کا سبب بننے والے  زیادہ عیش عشرت کی زندگی گزارتے دیکھائی دیتے ہیں۔ خیبر سے لے کر کراچی تک ملک کی سیاسی جماعتیں ملک کا تماشہ بنا رہی  ہیں۔ ہر سیاسی جماعت یہ تو نہیں کہتی  کہ وہ پارسائی کی سیاست کر رہے ہیں مگر دوسری تمام سیاسی جماعتوں کو بھرپور تنقید کا نشانہ بناتی ہیں۔ اس بات کی پہچان ناممکن ہو چکا ہے کہ  کون سی سیاسی جماعت نظریاتی ہے یا پھر مفادات کی سیاست کررہی ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 09 2017

پاکستان کے معاشی مفادات بہت حد تک کراچی کے حالات پر انحصار کرتے ہیں۔ یوں تو پورا ملک ہی دہشت گردی کی زد میں رہا ہے مگر جو کچھ کراچی میں ہوا وہ پاکستان کی تاریخ  کاسیاہ ترین باب تھا۔ اس تاریک دور کی مرہونِ منت پاکستان مسلسل معاشی بدحالی کا شکار ہوتا چلا گیا اور کراچی جیسا روشنیوں کا شہر تاریکی میں ڈوبتا چلا گیا۔ ساتھ ہی کراچی شہر کی معاشرتی زندگی بھی تباہ ہوتی چلی گئی۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 08 2017

پچھلے دنوں ہمارے ایک بزرگ کالم نویس سید انور محمود  دارِ فانی سے کوچ کرگئے ۔ شاہ صاحب ‘سچ کڑوا ہوتا ہے‘ کے عنوان سے ملک کے بیشتر اخبارات میں لکھتے رہے ۔ ہماری شاہ صاحب سے وابستگی ‘ہماری ویب رائٹرز کلب‘ کی مرہون منت تھی۔ ہماری ویب رائٹرز کلب آن لائن لکھنے والوں کا  مشہور اور منظم کلب ہے ۔ شاہ صاحب اس کلب کی داغ بیل ڈالنے والوں میں شامل تھے۔  آپ کی لکھنے لکھانے سے دلچسپی کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ طبعیت کی ناسازگاری کے باوجود ہماری ویب رائٹرز کلب کی کم و بیش ہر نشست کے ساتھ ساتھ دیگر پروگراموں میں شرکت کرتے تھے۔ اور  اپنی شرکت کا احساس بھی کراتے رہتے تھے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 03 2017

ہم نے پڑھا ہے کہ محبت لفظوں کی محتاج نہیں ہوتی۔ یہ جتانے سے ہوتی ہے اور اپنی وضاحت کرتی چلی جاتی ہے ۔ بالکل اسی طرح پاکستان کے حکمران کبھی بھی یہ نہیں کہتے کہ انہیں روپے پیسے سے محبت ہے مگر وہ اسے ہر ممکن اور ناممکن طریقیوں سے حاصل کرکے اس بات کو واضح کردیتے ہیں کہ ان کی محبت کیا ہے۔ جبکہ پاکستان سے محبت بلکہ عشق کے دعوے کرتے نہیں تھکتے۔ قول اور فعل میں اس تضاد  سے ان کی اصلیت کا پتہ چلتا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 31 2017

موت برحق ہے ، موت کا منکر بھی موت سے نہیں بچ سکتا۔ لیکن ایک طبعی موت ہوتی ہے اور ایک خودکشی ۔ خودکشی کو اسلام نے حرام قرار دیا ہے کیوں کہ زندگی اللہ کی جانب سے دی گئی ایک نعمت ہے اور خودکشی کفران نعمت کے مترادف ہے ۔ حالات و واقعات انسان کو کیا کچھ کرنے پر مجبور کردیتے ہیں ان ہی میں سے ایک خود کشی ہوتی ہے ۔ جسکا ایک سبب معاشرے کی بے ثباتی کے منہ پر طماچہ ہوتا ہے مگر ہم جس معاشرے کا حصہ ہیں یہ بے حس بھی ہوتا چلا جارہا ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 27 2017

عام پاکستانی دن میں ایک بار یہ ضرور سوچتا ہے کہ یہ معاشرہ کیسے ٹھیک ہوگا۔ کب یہ ٹریفک پولیس والے پیسے لئے بغیر اسے چھوڑ دیں گے، کسی اہم شخص کی زیادتیوں پر پوچھ گچھ ہوگی، کب ہمیں علاج معالجے کی بنیادی سہولیات میسر ہوں گی،  ہماری عزت کیسے محفوظ ہوگی،  بچوں کو یکساں تعلیمی سہولت کیسے  میسر آئے گی اور کب بغیر کسی سفارش کے کسی اہلیت کی بنیاد پر نوکری ملے گی۔ اس طرح کے ان گنت سوالات روز ہمارے ذہنوں میں گونجتے رہتے ہیں۔ ان سوالات کی وجہ سے بلند فشار خون اور شوگر جیسے امراض  تیزی سے ہم پر حملہ آور ہو رہے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 25 2017

انسان اپنی ترجیحات طے کرتا ہے پھر ان پر عمل کرنے کیلئے کمر بستہ ہوتا ہے ۔ بھوک و افلاس دنیا کا سب سے بڑا مسئلہ ہے اور نا معلوم کب سے ہے۔  دنیا اکیسویں صدی سے گزر رہی ہے جسے جدید ترین ایجادات کی صدی کہا جاسکتا ہے۔ اتنی جدت کے بعد بھی دنیا میں بھوک اور افلاس کا خاتمہ نہیں ہوسکا۔  دنیا عدم توازن کے باعث بھوک جیسے گھمبیر مسلئے کو حل نہیں کر پائی اور توازن میں بہتری لانے کیلئے کوئی خاطر خواہ عملی اقدامات بھی نہیں کئے گئے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 20 2017

مشہور کہاوت ہے: ‘چور سے کہو چوری کرے اور شاہ سے کہو جاگتے رہنا۔‘ وطن عزیز پاکستان میں سیاست کے ٹھیکیداروں کا یہی کردار ہے جس کی بدولت باریوں کی سیاست نے جنم لیا ہے۔ یعنی جیتنے والے جیسے بھی انتخابات  جیت گئے ہوں مگر ہم تم سے ہاتھ ملانے کو تیار ہیں اور وہ اس شرط پر کہ اگلی باری اقتدار ہمیں دلانے میں مددگار بنوگے۔ پاکستان میں جماعتی طرز پر انتخابات ہوتے ہیں اورگزشتہ تین دہائیوں سے دو جماعتیں ہی اس کھیل میں کلیدی کردار ادا کرتی آرہی ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 12 2017

کسی بھی ملک کا تعلیمی نظام بنیادی طور پرریاست کے نظریات کی بنیاد پر کھڑا ہونا چاہئے ۔ دنیا میں مختلف تعلیمی نظاموں کے تحت تعلیم کو فروغ دیا جارہا ہے او یہ  وقت کے ساتھ ساتھ  سے تبدیل ہوتے رہتے ہیں۔ کہیں ابتدائی تعلیم کھیل کود سے شروع کی جاتی ہے اور کہیں تعلیم کا آغاز فنی طرز پر کیا جاتا ہے۔ علم کی افزائش اور نشو نما کیلئے ضروری ہے کہ علم کو عام کیا جائے اور باآسانی دستیاب کیا جائے ۔

مزید پڑھیں

Praise and prayers for the great people of Turkey

One year ago, this day, the people of Turkey set an example by defending their elected government and President Recep Tayyip Erdogan against military rebels.

Read more

loading...