مباحث (131)

  وقت اشاعت: 29 2017

میری بیٹی کو مجھ سے اکثر ایک شکایت بہت ہی شدید طریقے سے رہی ہے۔
وہ یہ کہ اکثر میرے فیس بک پر موجود لوگ اسے فرینڈ ریکئسٹ بھیجتے ہیں۔ گو کہ چند خواتین یا لڑکیاں بھی اس میں شامل ہوتی ہیں مگر ظاہر ہے کہ اسے مرد یا لڑکے زیادہ کھٹکتے ہیں یا یوں کہا جائے کہ برے لگتے ہیں۔ کیونکہ خود دبئی میں رہتی ہے اس لیے آئے دن فرینڈ ریکوئیسٹ کا اسکرین شاٹ اور ایک بپھرا ہوا میسج آتا ہے کہ یہ دیکھیے۔ یہ آپ کے دوست اور فین!
جواب میں میں اسے ایک مسکراہٹ بھیج دیتی ہوں۔
پھر سوال آتا ہے کہ آپ اسے کتنا جانتی ہیں؟
میں کہتی ہوں کہ کوئی خاص نہیں۔
پوچھتی ہے کہ میں رجیکٹ کر دوں؟
میں کہتی ہوں کہ کر دو۔ اس کا آپشن تم رکھتی تو ہو!

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 01 ستمبر 2017

میں نے آنکھ کھول کر دنیا کو دیکھا تو ہر سال کا حج زندگی کا لازم حصّہ پایا۔ بابا اور اماں کی زندگی مکہ اور مدینہ کے گرد منڈلاتی تھی دو پروانوں کی طرح۔ تیسری میں آ گئی جسے ان کی انگلی پکڑ کر اس مرکزِ حیات کے گرد منڈلانا ہوتا تھا۔ بابا سرکاری ملازم تھے۔ ہر سال حج کے لیے ان کی چھٹی کا معاملہ پھنس جاتا۔ اعتراض آتا کہ ابھی پچھلے سال تو گئے ہو! اُدھر چھٹی کی درخواست چیف سیکریٹری کی ٹیبل پر پڑی پھڑپھڑا رہی ہوتی اور اِدھر وہ بے چین ہوئے پھرتے اور اماں کو سفر کی تیاری کا کہہ رہے ہوتے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 12 اگست 2017

بچہ مر گیا
 جمہوریت کا قافلہ آگے بڑھ گیا
نواز شریف کی جدوجہد کو بس شہید کے خون کی ضرورت تھی، سو بالآخر ایک بچہ جمہوریت کی راہ میں کچلا گیا اور صد آفرین کہ کیپٹن صفدر جیسے درویش صفت مجاہد نے بچے کی کچلی گئی لاش کو اس جدوجہد کا شہید ہونے کا تمغہ بھی عطا کر دیا، جو سیدھا بچے کے باپ کے دل میں جا لگا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 29 جولائی 2017

اس ملک کا پہلا صادق و امین جنرل ضیاء تھا۔

جو خود ایک ایسا نفسیاتی مریض تھا جسے بھٹو دشمنی میں جل کر سیاہ ہو چکے مولویوں اور فتویٰ سازوں نے وردی کے اوپر امیرالمومنین کی شیروانی پہنائی تھی۔ انہوں نے اسے اس ذہنی بیماری میں مبتلا کر دیا تھا کہ ایک بھٹو کو پھانسی چڑھا کر تم بخشے جا چکے ہو۔ تمہارے تمام پوشیدہ گناہ کبیرہ بھی اور صغیرہ بھی معاف ہو چکے ہیں۔ اب تم باوضو ہو۔ ہر انسان کی طرح وہ بھی اپنی ذاتی زندگی میں گناہوں اور خطاؤں سے گزرا ہی ہوگا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 23 جون 2017

ذوالفقار علی بھٹو نے سب کو پریشان کر دیا ہے۔ گویا وہ ہم سب کی مشترکہ پراپرٹی ہو جو اب ہماری بندر بانٹ میں ہمارے حصے میں آ نہیں پا رہی۔ ہم ہاتھ ملتے رہ گئے ہیں۔ تلملا رہے ہیں۔

مگر کمال کر دیا اس بچے نے! پاکستانی سماج، پاکستان میں مذہب کے بیوپاریوں، پاکستانی سیاست اور پاکستانی اسٹیبلشمنٹ کے منہ پر ایک طمانچہ دے مارا ہے اس نے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 15 مئی 2017

پچھلی رات معافیوں کی رات کے طور پر منائی گئی۔ سب نے سب سے کھڑے کھڑے معافی مانگی اور صبح صبح ہوتے ہلکے پھلکے ہو کر سو گئے۔ سوشل میڈیا نے اسے اور بھی آسان کر دیا ہے۔ خدا کرے روزِ محشر بھی وائی فائی کام کرتا ہو اور ہم سوشل میڈیا کے ذریعے ایک دوسرے سے یوں ہی رابطے میں ہوں۔ اتنی آسانی سے حقوق العباد کی اگر معافیاں روزِ محشر بھی ہو گئیں تو یقیناً حساب مختصر ہو جائے گا اور جلد از جلد ہم بہشت کے ائرکنڈیشنڈ ہال میں پہنچ چکے ہوں گے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 20 اپریل 2017

میری اماں عجب عاشق رسولﷺ تھیں. خود اپنے عشق میں بڑی حجتی تھیں مگر مجال ہے کوئی نوجوان ان کے سامنے دین پر بحث کرتا۔ فوراً کہتیں …. طہارت کرتے ہو؟ جاؤ پہلے طہارت ٹھیک سے کر آؤ پھر اللہ رسولﷺ کے بارے میں بات کرو۔ پھر غصے سے بڑبڑاتیں کہ …. ہے ڈھنگ طہارت کرنے کا بھی نہیں انہیں اور چلے ہیں اللہ رسولﷺ پر بات کرنے….. لفظ طہارت تو میں نے حدِ ادب میں لکھ دیا ہے، وہ تو ٹھیٹھ سندھی میں اعضا کے نام لے کر کہتی تھیں کہ پہلے جا کر دھو کے آؤ … پھر بات کرو ……

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 28 2016

ایک دن گپ شپ کے دوران عائشہ صدیقہ نے پوچھا کہ بی بی کی لیگیسی کیا ہے؟ فوری جواب تو یہ بنتا تھا کہ پیپلز پارٹی! پر پتہ نہیں کیوں ایک فضول سا جواب لگا یہ۔
حال ہی میں بلاول کو دیکھتے ہوئے اپنے ہی دماغ نے یہ سوال دہرایا اور جواب سوچا کہ کیا بلاول بی بی کی لیگیسی ہے؟
اس جواب پر بھی دل نہ مانا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 24 2016

میں نے دنیا میں آنکھ کھولی تو مدینہ منورہ کو زندگی کا حصّہ پایا۔ میری پیدائش سے پہلے ہی اماں اور بابا کے عشق کا رُخ مدینہ منورہ کی طرف مڑ چکا تھا۔ دونوں میں اگر کوئی قدر مشترک تھی تو وہ یہ منزل تھی، جہاں ہر سال انہیں روضہِ پاک کے سامنے جا کھڑے ہونا ہوتا تھا اور اپنے وجود کے پورے عجز و انکسار کے ساتھ سلام پیش کرنا ہوتا تھا نبیؐ جی کے حضور۔

مزید پڑھیں

Praise and prayers for the great people of Turkey

One year ago, this day, the people of Turkey set an example by defending their elected government and President Recep Tayyip Erdogan against military rebels.

Read more

loading...