فوری تبصرہ


  وقت اشاعت: 1 دن پہلے 

اتوار کو جرمنی میں منعقد ہونے والے انتخابات میں چانسلر اینجیلا مرکل چوتھی بار اقتدار سنبھالنے میں کامیاب ہو گئی ہیں لیکن ان کی سیاسی حیثیت بری طرح متاثر ہوئی ہے۔ اسی کے ساتھ ہی یورپی لیڈروں کا یہ اعتبار بھی کمزور ہؤا ہے کہ جرمنی کی طاقتور چانسلر یورپ کی قیادت کرسکتی ہیں اور جرمن عوام ان کے ساتھ ہیں۔ اتوار کے انتخاب میں مرکل کے قدامت پسند انتخابی اتحاد کو 33 فیصد ووٹ ملے ہیں اور انہیں جرمن پارلیمنٹ بوندیس تاگ میں 35 فیصد نشستیں حاصل ہوئی ہیں تاہم انہیں 709 ارکان کے ایوان میں اکثریت حاصل کرنے کے لئے مزید 109 نشستوں کی ضرورت ہوگی۔ ملک کی دوسری بڑی پارٹی سوشل ڈیموکریٹس کے لیڈر مارٹن شلز نے انتخاب کے بعد اینجیلامرکل کے ساتھ حکومت میں شامل ہونے سے انکار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کی پارٹی اپوزیشن میں بیٹھے گی۔ اس صورت میں مرکل کو حکومت سازی کے لئے گرین پارٹی اور دائیں بازو کی دوسری پارٹی ایف ڈی پی کے ساتھ سیاسی معاہدہ کرنا پڑے گا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 1 دن پہلے 

سابق وزیر اعظم نواز شریف تمام افوہوں اور قیاس آرائیوں کے باوجود کل پاکستان واپس آرہے ہیں۔ سینیٹر مشاہداللہ نے اس کا باقاعدہ اعلان کرتے ہوئے بتایا ہے کہ نیب کے مقدمات نواز شریف کے سیاسی فیصلہ کے سامنے کوئی حیثیت نہیں رکھتے۔ تاہم انہوں نے یہ بتانے سے معذوری ظاہر کی ہے کہ کیا نواز شریف احتساب عدالت کے سامنے پیش ہوں گے۔ اب تک شریف خاندان نے نیب کی کارروائی میں شریک نہ ہونے کا فیصلہ کیا ہؤا تھا۔ نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے حال ہی میں ایک ٹویٹ پیغام میں کہا تھا کہ ’ یہ انتقامی کارروائی ہے اور ہم اس کا حصہ نہیں بنیں گے‘۔ تاہم بی بی سی اردو سروس نے آج لندن سے حسین نواز کے حوالے سے خبر دی تھی کہ نواز شریف پاکستان جا کر احتساب عدالت میں بھی پیش ہوں گے۔ عدالت نے انہیں منگل 26 ستمبر کو طلب کیا ہؤا ہے۔ وزیر خزانہ اسحاق ڈار بھی نواز شریف کے ساتھ ہی واپس آرہے ہیں اور ان کے ترجمان کے مطابق وہ سوموار کو احتساب عدالت میں پیش ہو ں گے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 2 دن پہلے 

اقوام متحدہ میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جارحانہ تقریر کے بعد شمالی کوریا اور ایران کا رد عمل ظاہر کرتا ہے کہ دنیا میں امن اور مفاہمت کو ڈنڈے کے زور پر نافذ نہیں کیا جا سکتا۔ منگل کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے غیر معمولی طرز بیان اختیار کیا تھا۔ ایک ایسا ادارہ جسے دوسری جنگ عظیم کے بعد دنیا میں تنازعات کو ختم کرنے اور امن عام کرنے کی کوششوں کو فروغ دینے کے لئے قائم کیا گیا تھا، اسی کے پلیٹ فارم سے اپنی پہلی تقریر کرتے ہوئے امریکی صدر نے شمالی کوریا کو صفحہ ہستی سے مٹانے اور ایران کے ساتھ چھ ملکوں کا جوہری معاہدہ ختم کرنے کی دھمکی دی تھی۔ ایران اور شمالی کوریا کے سخت رد عمل کے علاوہ عام طور سے امریکی حکومت کا ساتھ دینے والے مغربی رہنماؤں نے بھی دبے لفظوں میں اس لب و لہجہ اور جنگ کی دھمکیاں دینے کے انداز کو مسترد کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ جنگ کسی مسئلہ کا حل نہیں ہے۔ شمالی کوریا نے اس تقریر کو ’ کتے کے بھونکنے ‘ سے تشبیہ دیتے ہوئے امریکی صدر کی دھمکی کو مسترد کیا تھا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 3 دن پہلے 

سابق صدر اور آرمی چیف پرویز مشرف نے ایک ویڈیو پیغام میں پاکستان پیپلز پارٹی کے معاون چیئرمین آصف علی زرداری کو بے نظیر بھٹو کے علاوہ 1996 میں مرتضیٰ بھٹو کے قتل کا ذمہ دارقرار دیا ہے اور کہا کہ انہوں نے بھٹو خاندان کو تباہ کرنے میں بنیادی کردار ادا کیا ہے۔ پرویز مشرف کا یہ بھی دعویٰ ہے کہ بلاول، آصفہ اوربختاور بھٹو کو یہ بات سمجھنی چاہئے کہ بے نظیر بھٹو کے قتل کا سب سے زیادہ فائیدہ صرف آصف زرداری کو پہنچا تھا۔ اس لئے ان کے سوا پیپلز پارٹی کی چیئر پرسن کو اور کون قتل کروا سکتا تھا۔ بے نظیر بھٹو کو 27 دسمبر 2007 کو لیاقت باغ راولپنڈی میں ایک جلسہ کے بعد گولی مار کر ہلاک کردیا گیا تھا اور ایک بم دھماکہ کے ذریعے اس بات کو یقینی بنایا گیا تھا کہ یہ حملہ سو فیصد کارگر ثابت ہو۔ آصف زرداری پر پرویز مشرف کے براہ راست الزامات سے پہلے لاہور ہائی کورٹ کے راولپنڈی بنچ میں تین پٹیشن داخل کی گئی تھیں جن میں پرویز مشرف کو بے نظیر کے قتل کا قصور وار قرار دیتے ہوئے عدالت سے انہیں سخت ترین سزا دینے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ پرویز مشرف کے الزامات ان درخواستوں کے بعد عائد کئے گئے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 5 دن پہلے 

امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے آج اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے جو لب و لہجہ اختیار کیا ہے اور دنیا پر امریکی مرضی ٹھونسنے کے لئے طاقت کے استعمال کی جس طرح دھمکیاں دی ہیں، اس سے نہ صرف امریکی صدر کے عہدہ کی کا وقار کم ہؤا ہے بلکہ اقوام متحدہ کے پلیٹ فارم کو مفاہمت، دوستی اور تنازعات حل کرنے کی جگہ سمجھنے اور بنانے کی کوشش کرنے کی بجائے، اسے جنگ کرنے اور اشتعال دلانے کے لئے استعمال کرنے ایک نہایت بھیانک اور افسوسناک روایت قائم کی گئی ہے۔ ٹرمپ کی تقریر کسی انتہا پسند اور جنگجو ذہنیت رکھنے والے ایک ایسے قوم پرست کی گفتگو تھی جو اپنی ناک سے آگے دیکھنے کی صلاحیت نہ رکھتا ہو۔ ان کے قوم پرستانہ لب و لہجہ کا ایک ہی مقصد تھا کہ وہ امریکہ میں اپنے ووٹروں کو یہ باور کروا سکیں کہ وہ ان انتہا پسندانہ نعروں سے سر مو انحراف کرنے کے لئے تیار نہیں ہیں جن کی وجہ سے ٹرمپ اپنے ملک کے انتہا پسند گروہوں کی حمایت حاصل کرنے اور اس طرح انتخاب جیتنے میں کامیاب ہوئے تھے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 7 دن پہلے 

سابق وزیر اعظم نواز شریف کی علیل اہلیہ کلثوم نواز نے لاہور کے حلقہ 120 سے قومی اسمبلی کا انتخاب جیت لیا ہے۔ یہ نشست ان کے شوہر کو سپریم کورٹ کی طرف سے نااہل قرار دیئے جانے کے بعد خالی ہوئی تھی۔ کلثوم نواز کاغذات نامزدگی جمع کروانے کے فوری بعد لندن چلی گئی تھیں جہاں گلے کے کینسر کی تشخیص کے بعد ان کا علاج ہو رہا ہے اور فیملی ذرائع کے مطابق وہ تیزی سے رو بصحت ہورہی ہیں۔ ان کی غیر موجودگی میں ان کی بیٹی مریم نواز نے ان کی انتخابی مہم چلائی تھی۔ فوج اور ادراوں کے ساتھ اختلافات کی وجہ سے نواز شریف اور شہباز شریف کے درمیان بھی دوری کی اطلاعات آتی رہی ہیں۔ اس کے علاوہ یہ بات بھی واضح ہے کہ نواز شریف اپنے بھائی شہباز شریف یا ان کے بیٹے حمزہ شہباز کی بجائے اپنی بیٹی کو ہی اپنا سیاسی وارث بنانا چاہتے ہیں۔ اس لحاظ سے یہ انتخاب مریم نواز کے لئے بھی کڑے امتحان کی حیثیت رکھتا تھا۔ اس کامیابی سے عملی سیاست میں مریم کے آگے بڑھنے کی راہیں کھل سکتی ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 17 ستمبر 2017

تین روز کی وضاحتوں کے بعد سپریم کورٹ کے پانچ رکنی بنچ نے جمعہ کی صبح 28 جولائی کو اپنے ہی دیئے گئے فیصلہ کے خلاف نواز شریف ، ان کے بیٹوں ، بیٹی اور داماد کے علاوہ اسحاق ڈار کی دائر کردہ نظر ثانی کی درخواستوں کو مسترد کردیا ہے۔ 13 ستمبر کو شروع ہونے والی اس سماعت کے دوران بنچ میں شامل جج حضرات نواز شریف کے وکیل کو یہ یقین دلاتے رہے کہ وہ پوری طرح غیر جانبدار ہیں اور اگر ایک بار ان کے مؤکل کے خلاف فیصلہ دیا گیا ہے تو اگلی بار وہ انہیں ریلیف بھی دے سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ بنچ کے ارکان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ان کے ریمارکس کا ٹرائل کورٹ میں نواز شریف اور ان کے خاندان کے خلاف مقدمات پر کوئی اثر مرتب نہیں ہو گا اور نہ ہی جے آئی ٹی کی رپورٹ مستند اور حتمی ہے بلکہ سپریم کورٹ کے فیصلہ میں جے آئی ٹی کے کام کی اسی طرح توصیف کردی گئی تھی جیسے وکلائے صفائی کی بھی تعریف کی گئی ہے۔ ان سب کلمات خیر اور غیر جانبداری کے اعلانات کے باوجود سپریم کورٹ کے بنچ کو نہ جانے کس بات کی جلدی تھی کہ انہیں اتنی عجلت میں فیصلہ سنانا پڑا کہ اس کا جواز بعد میں فراہم کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 14 ستمبر 2017

پاکستان میں اداروں کی تباہ حالی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں۔ کسی ادارے کو سیاستدان گالیاں دیتے نظر آتے ہیں تو کسی کو عدلیہ برا بھلا کہتی ہے اور فوج کسی بھی ادارے کو بالا دست ماننے کو تیار نہیں۔ پاناما کیس نے اداروں کی اہلیت کے ساتھ ساتھ شفافیت اور انصاف کے نظام پر کئی سوالات کھڑے کئے۔ نواز شریف کو نااہل کر دیا گیا اور اب نظر ثانی اپیلوں کا شور و غل پھر میڈیا اسکرینوں کی زینت بنا ہوا ہے۔ سابق وزیراعظم کے وکیل خواجہ حارث نے کئی اہم سوالات عدالت میں اٹھائے ۔ سبھی سوالات کچھ دیر میں اسکرینوں سے غائب ہو گئے مگر جسٹس شیخ عظمت سعید کے ریمارکس مستقل جگمگاتے رہے۔ سماعت کے دوران وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے وکیل شاہد حامد نے کہا کہ ان کے موکل کے خلاف میڈیا کے ذریعے نفرت انگیز مہم چلائی گئی۔ حیرت انگیز طور پر عدالت کے جوابی ریمارکس انتہائی سخت تھے۔ جسٹس عظمت سعید کا کہنا تھا ایسی ہی مہم عدلیہ کے خلاف بھی چلائی گئی۔ جیسا کرو گے ویسا بھرو گے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 12 ستمبر 2017

پاکستان ایک عرصے سے دہشت گردی کا شکار ہے۔ ہزاروں قیمتی جانیں شدت پسندی کی بھینٹ چڑھ چکی ہیں اور قوم اب تک وحشی درندوں کے چنگل سے مکمل طور پر آزاد نہیں ہوئی۔ کرنے کے بہت سے کام باقی ہیں مگر ایسے ماحول میں کرکٹ فیور نے پاکستانیوں کو کچھ لمحات کیلئے سارے غم بھلا دیئے ہیں۔ ہر کوئی اپنے اپنے انداز میں ورلڈ الیون کو خوش آمدید کہہ رہا ہے۔ دنیائے کرکٹ کے بڑے بڑے اسٹار ورلڈ الیون کا حصہ ہیں اور کسی نے بھی ان کھلاڑیوں کو ”ریلو کٹا“ کہنے کی جسارت نہیں کی۔ فاف ڈپلولیسی ، ہاشم آملہ ، عمران طاہر، تمیم اقبال ، تھسارا پریرا ، بین کٹنگ ، ٹم پین سمیت اسی پائے کے دیگر کھلاڑیوں کی دنیا بھر میں ایک ساکھ ہے اور یہ تمام کھلاڑیوں اپنے اپنے ممالک کی نمائندگی کے علاوہ غیر ملکی لیگز میں بھی نمایاں طور پر حصہ لیتے ہیں۔ پاکستان کے موجودہ حالات میں ان سپر اسٹار کی آمد پاکستان کے ساتھ ساتھ کھیل کی بھی جیت ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 11 ستمبر 2017

 نواز شریف کی نااہلی کے بعد نئے وزیراعظم کا خطے اور دنیا کے بدلتے ہوئے نئے ماحول میں دلچسپ بیان سامنے آیا ہے۔ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے دھمکی نما التجا یا التجا نما دھمکی آمیز انٹرویو دیا ہے جس میں انہوں نے امریکہ کو متنبہ کیا ہے کہ اگر اس نے پاکستان پر پابندیاں لگائیں یا فوجی امداد میں کمی کی تو وہ مجبوری کے عالم میں چین اور روس کی جانب دیکھنے پر مجبور ہو جائے گا۔ انہوں نے اپنے انٹرویو میں پاکستان کا روایتی موقف دہراتے ہوئے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں مشترکہ کاوشوں پر زور دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ہماری کوششوں کو نقصان پہنچانے والے اقدامات امریکہ کیلئے نقصان کا سبب بنیں گے۔ یہ بیان ایسے ماحول میں سامنے آیا ہے جب امریکہ کی جنوبی ایشیا کے حوالے سے نئی پالیسی سامنے آ چکی ہے اور اس پالیسی میں پاکستان کے سامنے کئی سنگین سوالات کھڑے کئے گئے ہیں۔

مزید پڑھیں

Praise and prayers for the great people of Turkey

One year ago, this day, the people of Turkey set an example by defending their elected government and President Recep Tayyip Erdogan against military rebels.

Read more

loading...