فوری تبصرہ


  وقت اشاعت: آج 10:15:22

لاہور ، کوئٹہ ، پشاور اور سہون میں قلندر کی درگاہ کو نشانہ بنانے کے بعد دہشت گردوں نے آج چارسدہ میں وکلا کو خون میں نہلانے کی کوشش کی مگر امن کے دشمن ناکام ہو گئے۔ مقامی حکام کے مطابق چارسدہ میں تنگی سیشن کورٹ میں تین حملہ آوروں نے داخل ہونے کی کوشش کی جس پر چوکس سکیورٹی اہلکاروں نے انہیں مار گرایا۔ دو خودکش حملہ آور بارودی جیکٹس پھٹنے جبکہ تیسرا حملہ آور گولی لگنے سے ہلاک ہوا۔ اس حملے میں ایک وکیل سمیت پانچ افراد نے جام شہادت نوش کیا۔ یہ تمام افراد حملہ آوروں کی جانب سے پھینکے گئے دستی بم کی زد میں آئے تھے۔ اس حملے کو یقینا ایک ناکام حملہ کہا جا سکتا ہے اور فورسز کے جانبازوں کا ردعمل بتا رہا ہے کہ وہ دہشت گردی سے خوفزدہ نہیں بلکہ ڈٹ کر مقابلہ کرنے اور کوئی بھی قربانی دینے کیلئے تیار ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 2 دن پہلے 

کسی بھی سانحہ بھی ہمارا قومی ردعمل دو چار سوگ منانے، چند آنسو بہانے اور بھول جانے تک محدود ہو چکا ہے۔ پاکستان دہشت گردی کے ہاتھوں نجانے کتنے زخم سہہ چکا۔ ہزاروں لوگ وحشت ناک جنگ کا ایندھن بن چکے، جن کے گھروں میں آج بھی شام غریباں بپا ہے۔ خواہش تھی کہ سانحہ سہون وہ آخری سانحہ ہوتا جس سے ہم سبق سیکھتے اور مستقبل کا لائحہ عمل ترتیب دیتے مگر صد حیف کہ سانحہ کے اگلے ہی روز ایسی خبریں سامنے آئیں جنہوں نے ملک بھر کو ہلا کر رکھ دیا۔ سہون حملے کے اگلے ہی شہدا کے اعضا گندے نالوں میں پڑے ہونے کی خبریں اور فوٹیجز سامنے آئیں جس نے حساس دلوں اور روحوں کو تڑپا دیا۔جن کے پیارے اس سانحہ میں شہید نہیں ہوئے ان کا کرب بھی بیان سے باہر تھا تو یہ بات تصور سے باہر ہے کہ جن کے اپنے شہید ہوئے ان کا تکلیف کیا ہو گی۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 2 دن پہلے 

پاکستان اور افغانستان کے مابین بنتے بگڑے تعلقات کشیدگی کی نئی نہج پر پہنچ چکے ہیں۔ پاکستان میں دہشتگردی کے پے در پے واقعات کے بعد کے فوجی ہیڈ کوارٹرز میں افغان سفارت کاروں کی طلبی کا غیر معمولی واقعہ اس کشیدگی کا غماز ہے۔ اس کے بعد افغان علاقوں میں دہشت گرد تنظیم جماعت الاحرار کے ٹھکانوں پر پاکستان کی جانب سے مسلسل بمباری دونوں ملکوں میں عدم اعتماد کی چغلی کھا رہی ہے۔ اس بمباری کے پاکستانی سفیر کو بھی افغانستان نے طلب کر احتجاج کیا ہے۔ دونوں ممالک میں اعتماد اور عدم اعتماد کی ایک تاریخ ہے تاہم موجودہ پیشرفت کے بعد دونوں ملکوں میں تعلقات کو معمول پر لانا ایک بڑا چیلنج ثابت ہو سکتا ہے۔ 

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 3 دن پہلے 

حضرت لعل شہباز قلندر کے مزار کو خون کے رنگ سے لال کر دیا گیا ہے۔ کئی بچے یتیم ہو گئے ۔ عورتیں بیوہ ہو گئیں۔ پیارے ہمیشہ کیلئے آنکھوں سے اوجھل ہو گئے۔ عظیم صوفی بزرگ کے مزار پر جذباتی تسکین کیلئے جانے والے ابدی نیند جا سوئے۔ آنکھیں ویران، دل اداس اور ہم بے حس ہو گئے۔ اب لامتناہی بیانات ، مذمتوں اور ردعمل کا سلسلہ جاری ہے۔ ملک گیر آپریشنز میں درجنوں مبینہ دہشت گردوں کو مار گرایا گیا۔ بحیثیت قوم ہم ردعمل کی بجائے عمل کی جانب متوجہ ہوتے تو یہ خوں رنگ واقعہ یقینا نہ ہوتا۔ حادثے قوموں کو جگاتے ہیں مگر ہم قوم رہے کب۔ المیہ در المیہ یہ ہے کہ مزار پر دھماکے کے بعد درجنوں متاثرین طبی سہولیات میسر نہ آنے پر خالق حقیقی سے جا ملے۔ اور اس کا ملبہ بھی سیاستدان ایک دوسرے پر گرانے میں لگے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 5 دن پہلے 

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اسرائیلی وزیراعظم کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے اسرائیل اور فلسطین کے درمیان تنازع میں اپنے دو ریاستی حل کی پالیسی سے پیچھے ہٹنے کا عندیہ دیا ہے۔ امریکی کی یہ نئی پالیسی مشرق وسطیٰ میں جاری تنازع میں مزید شدت لانے کے ساتھ خونی رنگ اختیار کر سکتی ہے۔ پوری دنیا دو ریاستی حل کی حمایت کرنے کے ساتھ فلسطین کو بطور ملک تسلیم کر رہی ہے مگر اسرائیل نوازی میں امریکہ اپنی دیرینہ پالیسی سے پیچھے ہٹ کر خطے میں جاری عدم استحکام کو جنگ کی جانب دھکیل رہی ہے۔ ڈونلڈ ٹرمپ کی متنازع پالیسیوں کے دوران یہ نیا شوشہ دنیا کے ساتھ ساتھ امریکہ کیلئے بے حد نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔ یہ پالیسی خود اسرائیل کی بقا اور سلامتی کیلئے خطرناک ہو گی جو طاقت کے زعم میں مظلوموں کو کچلنے پر تلا بیٹھا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 5 دن پہلے 

دھماکہ تو اسی دن ہو گیا تھا جس دن سپریم کورٹ کے احکامات کو جوتے کی نوک پر رکھنے والے داخلی سلامتی کے وزیر نے کالعدم تنظیموں کے وفد سے دارالحکومت میں ملاقات کی تھی، لاہور میں تو بس اس دھماکے کی آواز گونجی ہے کہ شاید کوئی جاگ جائے۔ مگر جنہیں خوفناک بم دھماکوں کی سینکڑوں ہولناک آوازیں ، زخمیوں کی سسکیاں، شہیدوں کی سوال پوچھتی نگاہیں ، یتیموں اور بیواؤں کے آنسو اور بین نہ جگا سکے ہوں انہیں صرف صور اسرافیل ہی جگا سکتا ہے۔ حالات میں تبدیلی کیلئے تبدیلی ناگزیر ہوتی ہے۔ ایسا کچھ تو ہے کہ اہل پاکستان سالوں سے لاشوں پر بین کر رہے ہیں مگر ان کے آنسو پوچھنے والا کوئی نہیں۔ ایسا کچھ تو ہے کہ ہم دہشتگردی کے عفریت پر قابو پانے میں ناکام ہیں اور اب ایسا کچھ تو کرنا ہو گا کہ معصوموں کا خون بہنا بند ہو۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 13 فروری 2017

انسانی حقوق کیلئے کام کرنے والے معروف ادارے ہیومن رائٹس واچ نے الزام عائد کیا ہے کہ پاکستان کی جانب سے افغان مہاجرین کے خلاف کریک ڈاؤن کیا گیا ہے جس میں اقوام متحدہ بھی ملوث ہے۔ ادارے نے پاکستان اور اقوام متحدہ کو تنقید کا نشانہ بنانے کے ساتھ یہ اعتراف بھی کیا ہے کہ پاکستان نے کئی دہائیوں تک افغان مہاجرین کی میزبانی کی۔ یہ اعتراف خود اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ پاکستان افغانستان کیلئے کس قدر قربانیاں دے چکا ہے۔ افغانستان کی مسلسل جنگ میں اگرچہ پاکستان کی ماضی کی کچھ پالیسیوں کا عمل دخل بھی ہے مگر پاکستان ان غلطیوں کا ازالہ کرنے کیلئے مسلسل سرگرم ہے۔ 

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 12 فروری 2017

 یہ تاریخی حقیقت ہے کہ بظاہر طاقت ظالموں کے ہاتھ میں نظر آتی ہے مگر تاریخ کے صفحات میں جابروں سے زیادہ مظلوم طاقتور نظر آتے ہیں۔ ایسی ہی طاقت اور توانائی کے حامل مظلوم کشمیری بھی ہیں جو بھارتی سکیورٹی فورسز کی ظلم کی چکی میں پسنے کے باوجود آزادی مانگنے کے حق سے پیچھے ہٹنے کو تیار نہیں۔ یہ مظلوم جانوں کے نذرانے پیش کر رہے ہیں، تحریک آزادی کی راہ میں آنکھیں نچھاور کر رہے ہیں، خواتین کی عصمت و عفت چھینی جا رہی ہے، بچے اپنی معصومیت کی قربانی دے رہے ہیں مگر کوئی بھی حریت پسند کشمیری اپنے پیدائشی حق سے پیچھے ہٹنے کو تیار نہیں۔ یہی مظلومیت کی طاقت ہے اور تاریخ کے صفحات میں یہ مظلومیت بھارت کے ماتھے کا کلنک ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 14 فروری 2017

پاکستان سپر لیگ جس قدر دھوم دھام سے شروع ہوئی ، اب اس پر اسی قدر شکوک و شبہات کے بادل منڈلا رہے ہیں۔ فکسنگ کا ایک طوفان ہے جو پاکستان کرکٹ کو گھیرے میں لینے جا رہا ہے۔ شرجیل خان اور خالد لطیف کی معطلی کے بعد محمد عرفان ، شاہ زیب حسن اور ذوالفقار بابر بھی شکنجے کی گرفت میں آنے کو ہیں۔ پاکستان سپر لیگ کے چیئرمین نجم سیٹھی خود یہ بتا رہے ہیں کہ بین الاقوامی سٹے بازوں سے رابطوں کے الزامات کے بعد اینٹی کرپشن یونٹ نے تحقیقات کا دائرہ وسیع کر دیا ہے۔ ادھر اطلاعات یہ بھی ہیں کہ مبینہ طور پر فکسرز سے روابط کے الزام میں پاکستانی کھلاڑیوں کو آئی سی سی نے پکڑا اور اسی کے دباؤ پر پاکستان کرکٹ بورڈ سخت اقدامات پر مجبور ہوا وگرنہ اس نے ملک کی عزت بیچنے والوں کو بچانے میں کوئی کسر اٹھا نہیں رکھی تھی۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 10 فروری 2017

خیالی باتیں ، بڑے بڑے دعوے ، عمل سے خالی وعدے ، طفل تسلیاں ، جھوٹی تقریریں، یہ اور نجانے کیا کیا اور کیسی کیسی عجب لن ترانیاں۔ ہمارے سیاستدانوں نے ملک کی پہچان ہی بدل ڈالی ہے۔ اگر کسی کے ساتھ دھوکہ یا فراڈ ہو جائے تو کہا جاتا ہے کہ اس کے ساتھ سیاست کھیلی گئی ہے۔ حالانکہ سیاست تو تدبر ، فہم و فراست اور معاملہ فہمی سے پیچیدہ گتھیوں اور مسائل کو سلجھانے کا نام ہے مگر ہمارے ہاں سیاست کو دھوکہ دہی سے بدل دیا گیا ہے۔ ہمارے ملک کے سب سے طاقتور اور بڑبولے وزیر چوہدری نثار علی خان فرماتے ہیں کہ ملک کو خطرہ صرف سرحدوں پر ہی نہیں۔ ملک کے اندر چھپے دشمنوں سے بھی ہے۔ عدالت کو جوتے کی نوک پر رکھنے اور کالعدم تنظیموں کے محافظ بننے والے وزیر کے اس بیان پر کون یقین کرے گا۔

مزید پڑھیں

Threat is from inside

Army Chief General Raheel Sharif assured the nation that country’s borders are secure and the army is aware of threats and intrigues of the enemies. Speaking at an even

Read more

loading...