معزز صارفین ہماری ویب سائٹ اپ ڈیٹ ہو رہی ہے۔ اگر آپ کو ویب سائٹ دیکھنے میں دشواری پیش آرہی ہے تو ہمیں اپنی رائے سے آگاہ کریں شکریہ

وزیر اعظم عباسی کا دورہ کابل

  وقت اشاعت: 06 اپریل 2018

اسلام آباد: پاکستان اور افغانستان کے درمیان فضائی حدود کی خلاف ورزی پر سامنے آنے والے تنازعہ کے باوجود وزیر اعظم شاہد خاقا ن عباسی آج کابل کے ایک روزہ دورہ پر جائیں گے جہاں وہ افغان حکومت کے ساتھ تعلقات بہتر بنانے کے لئے مختلف امور پر تبادلہ خیال کریں گے۔ پاکستان نے افغانستان کی جانب سے عائد فضائی حدود کی خلاف ورزی کا الزام مسترد کردیا ہے۔ افغان حکام نے دعویٰ کیا تھا کہ پاک فضائیہ کے طیاروں نے افغانستان کی فضائی حدود پار کر کے صوبے کنڑ میں حملے کیے جس کے نتیجے میں ‘بھاری مالی نقصان’ اٹھانا پڑا۔

دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے سوشل میڈیا پر ٹیئٹ کیا کہ ‘پاکستان کے دفاعی اداروں نے باجوڑ ایجنسی میں دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر حملے کیے جو افغانستان کی سرزمین پر قائم بیس سے تعلق رکھتے ہیں جس کے نتیجے میں پاکستانی حدود کے اندر لوگ زخمی بھی ہوئے’۔ پاکستان اور افغانستان کے ڈائریکٹر جنرل ملٹری آپریشن نے راولپنڈی میں ملاقات کی جہاں پاکستان نے سرحد پر دہشت گردوں کے خلاف کارروائیوں سے متعلق اہم معلومات کا تبادلہ ہؤا۔

اس سے قبل افغان وزارتِ خارجہ امور نے الزام لگایا تھا کہ  پاک فضائیہ کے جیٹ طیاروں نے 4 اپریل کو کنٹرکے علاقے دنگم میں چار بم گرائے۔

وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی افغانستان کے صدر اشرف غنی کی دعوت پر کابل کا ایک روزہ دورہ کریں گے اور ممکنہ طور پر عسکری تعاون میں بہتری کے حوالے سے دوطرفہ امور پر بھی تبادلہ خیال کیا جائےگا۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی حکومت کا محض دو ماہ سے بھی کم وقت رہ گیا ہے اس لئے یہ سوال اٹھایا جارہا ہے کہ  ایسے میں ان کا افغان صدر ڈاکٹر اشرف غنی کی دعوت پر دورہ کابل کتنا اہم ہوسکتا ہے۔ 

حالیہ دنوں میں پاکستان کے فوجی اور سیاسی رہنما باقاعدگی سے کابل کے دورے کر رہے ہیں۔ برف پگھلنے کا بظاہر آغاز پاکستان فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کے اس سال فروری میں دورے سے ہوا۔ کافی تلخیوں اور تاخیر کے بعد ہونے والے اس دورے میں جنرل باجوہ نے افغانستان اور امریکہ دونوں کو علاقائی سکیورٹی معاملات پر ’مشترکہ اور تسلسل کے ساتھ‘ کوششوں کی پیشکش کی تھی۔

آپ کا تبصرہ

Donald Trump's policy towards Pakistan

Donald Trump's; the president of US war of tweets was a fierce attack on Pakistan, accusing the country of "lies and deceit" and making "fools" of US leaders. Trump decla

Read more

loading...