معزز صارفین ہماری ویب سائٹ اپ ڈیٹ ہو رہی ہے۔ اگر آپ کو ویب سائٹ دیکھنے میں دشواری پیش آرہی ہے تو ہمیں اپنی رائے سے آگاہ کریں شکریہ

خالدہ ضیا کو سزا

  وقت اشاعت: 08 فروری 2018

ڈھاکہ: بنگلہ دیش میں حزبِ اختلاف کی رہنما خالدہ ضیا کو بدعنوانی کے الزامات کے تحت پانچ سال کی سزا سنائے جانے کے بعد مظاہرین اور پولیس میں جھڑپیں ہوئی ہیں۔

سابق وزیرِ اعظم خالدہ ضیا نے اپنے خلاف الزامات کو مسترد کیا ہے۔ ان پر  بچوں کی بہبود کے لیے بین الاقوامی فلاحی فنڈز میں خورد برد کے الزام عائد کیا گیا ہے۔ اس سزا کے باعث 72 سالہ بنگلہ دیشی رہنما رواں برس ہونے والے پارلیمانی انتخابات  میں حصہ نہیں لے سکیں گی۔   یہ مقدمہ خالدہ ضیا کے خلاف قائم درجنوں مقدموں میں سے ایک تھا جو  ان کی سیاسی حریف اور  موجودہ وزیرِ اعظم شیخ حسینہ واجد نے قائم کیے ہیں۔

خبروں کے مطابق عدالت میں جانے سے پہلے خالدہ ضیا نے روتے ہوئے رشتہ داروں کو دلاسہ دیتے ہوئے  کہا ’میں واپس آؤں گی، پرشان نہ ہوں اور بہادر بنیں۔‘ ڈھاکہ کی عدالت نے فیصلہ سنایا تو خالدہ ضیا کے ہزاروں حامی عدالت کے باہر موجود تھے جنہںی منتشر کرنے کے لیے پولیس نے آنسو گیس کا استعمال کیا۔ جھڑپوں میں متعدد پولیس اہلکاروں کے زخمی ہونے کی بھی اطلاعات ہیں۔

عدالتی فیصلہ بعد خالدہ ضیا کو جیل منتقل کر دیا گیا ہے۔ ان کے بیٹے طارق الرحمن کو بھی 10 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے تاہم وہ اس وقت لندن میں ہیں۔ خالدہ ضیا کے چار دیگر ساتھیوں کو بھی  سزائیں سنائی گئیں۔


 

آپ کا تبصرہ

Donald Trump's policy towards Pakistan

Donald Trump's; the president of US war of tweets was a fierce attack on Pakistan, accusing the country of "lies and deceit" and making "fools" of US leaders. Trump decla

Read more

loading...