ایڈیٹرکا انتخاب

  • نقل...روک سکو تو روک لو

    سنہ پچاس خاتمے کے قریب تھا، جب میں نے آخری امتحان دیا۔ اُس وقت نقل یوں ہوتی تھی کہ پڑوس میں بیٹھے لڑکے کی کاپی کو دیکھنے کی کوشش کرتے تھے، وہ بھی کن انکھیوں سے۔ اور پڑوس کا لڑکا بھی کچھ ایسے بانہیں پھیلا کر بیٹھتا تھا، جیسے مرغی انڈوں پر بیٹھتی ہے۔ بڑی تعداد میں لڑکوں کی تھرڈ ڈو [..]مزید پڑھیں

  • سیاست کا اینٹی ہیرو اور بکاؤ صحافت

    موسم بدل رہا ہے، اس سادہ جملے سے یہ ہرگز مراد نہیں کہ سردی ختم ہو چکی اور گرمی کی آمد آمد ہے۔ یہاں موسم کی جس تبدیلی کی طرف اشارہ ہے، وہ قومی تمثیل کے پہلے سے لکھے ہوئے اسکرپٹ کا اگلا ایکٹ ہے۔ کھیل کا ایک حصہ ختم ہوا۔ پردہ گر چکا۔ پردے کے پیچھے کرسیاں گھسیٹے جانے کی آوازیں سنائی د [..]مزید پڑھیں

loading...
  • آزادی اظہار کیوں ضروری ہے؟

    چند دن پہلے کی بات ہے میرا نو سالہ بیٹا اور میں اس کی تیراکی کی مشق سے واپس آ رہے تھے کہ ہمارے درمیان گفتگو شروع ہو گئی۔ اس نے کہا کہ سکول میں اس کی ٹیچر نے اس کو اور اس کے ہم جماعتوں کو اپنی اپنی زندگیوں کے مقاصد لکھنے کا کہا۔ میرے بیٹے نے لکھا کہ اس کی زندگی کا ایک مقصد یہ ہے کہ وہ [..]مزید پڑھیں

  • آن لائن آزادی اور حکومت کی پریشانی

    سوشل میڈیا نیٹ ورک ویب سائٹس کی وجہ سے جعلی خبروں، آن لائن ہتک آمیز زبان اور سائبر غنڈہ گردی کو فروغ ملا ہے۔ ان تمام خرابیوں کی روک تھام کے لیے عالمی سطح پر سوشل میڈیا نیٹ ورک ویب سائٹس کو ریاستی ریگولیشن میں لانے کی ضرورت محسوس کی جا رہی ہے۔ قانونی اعتبار سے آزادی اظہار کے ر [..]مزید پڑھیں

  • بھٹو چالیس سال بعد

    عدلیہ کے اپنے فیصلے ہوتے ہیں اور تاریخ کے اپنے۔  وقت دونوں کو موقع دیتا ہے اپنے آپ کو درست کرنے کا۔ ذوالفقار علی بھٹو پاکستان کا وہ سیاسی کردار ہے جس کے چاہنے والے بھی بہت ہیں اور ناپسند کرنے والے بھی۔ وہ غدار بھی ٹھہرا اور محبِ وطن بھی مگر جس چیز نے اسے امر کر دیا وہ اس کا تار [..]مزید پڑھیں

  • دہشت گردی کے خلاف جنگ نے دہشت گردی میں اضافہ کیا

    ’یہ کہیں سےبھی آئے ہوں سب مرنے والے ہمارے ہیں اور مارنے والے ہمارے نہیں‘  نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن کے یہ جملے واضح طور پر مظلوم اور ظالم کا فرق بتا رہے ہیں۔ دہشت گردوں کا کوئی مذہب نہیں ہوتا مگر دہشت گردی کے خلاف آواز اٹھانے والوں کا یقیناً مذہب انسانیت ہو [..]مزید پڑھیں

  • گھوٹکی کی دو ہندو بچیاں اور اکیس سوال

    22 مارچ کو قوم یوم پاکستان منانے کی تیاریاں کر رہی تھی اور ہندو ہم وطن ہولی کی خوشیوں کے انتظار میں تھے۔ اچانک خبر آئی کہ ضلع گھوٹکی کے تعلقہ دہڑکی سے رینا اور روینا نام کی دو کم عمر ہندو بچیاں 20 مارچ سے لاپتہ ہیں۔ ان بچیوں کے مبینہ اغوا کا مقدمہ ان کے بھائی کی مدعیت میں تب درج کیا [..]مزید پڑھیں

  • خداؤں کے نگر میں

    یونان کے دارالحکومت ایتھنز پر خداؤں کی حکومت ہے۔ آپ کسی طرف ہو لیجئے، کوئی نہ کوئی خدا آپ کا راستہ کاٹنے کے لئے ایستادہ ہوگا۔ ان سب خداؤں نے اپنی خدائیاں بھی بانٹ رکھی ہیں۔ کوئی ہواؤں کا نگران ہے، کوئی پانی کا ، کوئی موسم کی خبر رکھتا ہے تو کوئی محبت اور حسن کا دیوتا ہے۔ البتہ یہ [..]مزید پڑھیں