معزز صارفین ہماری ویب سائٹ اپ ڈیٹ ہو رہی ہے۔ اگر آپ کو ویب سائٹ دیکھنے میں دشواری پیش آرہی ہے تو ہمیں اپنی رائے سے آگاہ کریں شکریہ

اپوزیشن کا پاورشو، پھربھی متاثرین انصاف کے منتظر

  وقت اشاعت: 20 جنوری 2018 تحریر: غلام مرتضیٰ باجوہ   لاہور

پاکستان میں 2018کو سینیٹ اور قومی اسمبلی کے عام الیکشن کا سال کہاجارہاہے اور حسب روایت اپوزیشن  ، حکومتی اراکین قومی وصوبائی دونوں ہی عوام کے حقوق کا علم اٹھائے ملک بھر میں جلسے جلوس اور اجتماع کرنے میں مصروف ہیں ۔ سب سے بڑاپاور شومتحد اپوزیشن نے لاہور مال روڈ پر کیا جس کا مقصد سانحہ ماڈل ٹاؤن ، قصورمیں ننھی زینب سمیت متعدد مقتول بچیوں کے لئے انصاف کا مطالبہ تھا ۔ متحد ایوزیشن پاورشو میں عوامی تحریک کے سربراہ علامہ ڈاکٹرطاہرالقادری، پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زردراری ، چیئرمین تحریک انصاف عمران خان ، چیئرمین عوامی مسلم لیگ شیخ رشید ، مسلم لیگ (ق) کے مرکزی رہنما ء چودھری پرویز الٰہی ، سربراہ پاک سرزمین پارٹی مصطفی کمال سمیت اہم  رہنماؤں نے شرکت کی ۔

اس جلسے نے پارلیمنٹ میں ہلچل مچا دی۔ حکومتی جماعت مسلم لیگ نواز کے اراکین نے جلسے میں ہونے والی تقریریں کے باعث چند مقررین کے خلاف قرارداد بھی پاس کرلی۔ قرارداد میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ جلسے میں خطاب کے د وران مقررین نے اخلاقیات کی تمام حدیں پار کرکے حکمراں جماعت، صوبائی حکام اور شریف خاندان پر لعنت ملامت۔ تکہ بوٹی کرنے اورکپڑے نوچنے کی دھمکیاں دی گئیں۔ شیخ رشید نے صوبائی وزیرقانون رانا ثنا ء اللہ کی شکل کوچمگادڑ اورکمہارکے گملے سے تشبیہ دی۔  شیخ رشید نے حکمرانوں کو ڈھیٹ اوربے شرم قراردیتے ہوئے عمران خان کو بھی تشدد پر اکسایااورکہا کہ وہ لاٹھی نیزہ لے کر جاتی امرا کی طرف مارچ کریں۔ عوامی مسلم لیگ کے سربراہ نے نوازشریف کی ذات کو بھی نہ بخشا اور غلیظ زبان استعمال کرتے ہوئے قصہ سنایا کہ میاں صاحب کی پیدائش کے وقت نجومی نے میاں شریف کو بتایاکہ ان کے گھر میں پرلے درجے کا جھوٹا، مکاراورپیدا گیر بیٹا پیداہوگا۔ شیخ رشید نے شاہدخاقان کو ایئربلیو کا چور اور مریم نوازکو حسینہ واجد قراردیا۔ انہوں نے نیب کو بھی کہاکہ وہ شریفوں کو پکڑ کرمار یں۔ شریف خاندان کودھمکیاں دینے میں ڈاکٹرطاہرالقادری بھی پیچھے نہ رہے۔  پیپلزپارٹی، تحریک انصاف و دیگر جماعتوں کاساتھ دیکھ کر طاہر القادری بھی شیربن گئے اوربول اٹھے کہ اگرکارکنوں کو کہہ دوں تو تمہارے بدن کے کپڑے نوچ ڈالیں گے بوٹی بوٹی کردیں گے۔  تم جاتی امرا کے باہر قدم نہ رکھ سکو۔  ہم نہ بزدل ہیں نہ کمزور ہیں۔ ہاتھوں سے انتقام لے سکتے ہیں۔  انہوں نے شرکاء کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اگر کہو تو تاریخ دے دوں۔ اگلی اتوار کو رائے ونڈ کی اینٹ سے اینٹ بجا دوں گا۔ 

ماہر ین اور مبصرین کا خیال کہ لاہور مال روڈ پر متحدہ ایوز یشن پاور شوصرف سیاسی مقصد کیلئے تھا کیونکہ مارچ میں پیپلز پارٹی کے سب سے زیادہ ارکان سینیٹ  ریٹائر ہوں گے۔ پیپلز پارٹی کے 26 میں سے 18 ارکان ی مدت پوری ہو جائے گی۔  نواز لیگ کے ارکان کی تعداد 27 ہے جبکہ 11 مارچ کو مسلم لیگ نون کے 9 سینیٹرز ریٹائر ہوں  گے۔ شریک چیئرمین پیپلز پارٹی آصف علی زرداری نے جلسے میں نون لیگ کو واضح کردیا ہے کہ ہمارے بغیر آپ کی حکومت قائم نہیں رہے سکتی ۔ خبر یہ ہے کہ سینیٹ انتخابات میں مسلم لیگ (ن) کو 19 نشستیں، پاکستان پیپلز پارٹی کو 7، پاکستان تحریک انصاف کو 7، متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کو ، جے یو آئی (ف) کو 2، پختونخواہ ملی عوامی پارٹی کو 3، نیشنل پارٹی کو 2 نشستیں ملیں گی۔ سینیٹ انتخابات کے بعد ایوان بالا میں حکومتی جماعت نون لیگ کے سینیٹرز کی کل تعداد 37، پیپلز پارٹی کے سینیٹرز کی کل تعداد 15، تحریک انصاف کی 13، جے یو آئی ف کی 4، ایم کیو ایم کی 8، پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے سینیٹرز کی تعداد 6 تک پہنچ جائے گی۔

ضرورت اس امر کی ہے کہ شہدا اور سانحات کے نام پر سیاست کا سلسلہ بند کیا جائے اورمحب الوطن شہریوں  کے حقوق کیلئے اقدامات کئے جائیں ۔ تاریخ گواہ ہے کہ قوم کی ایک ہی آوازسے محلات مٹی میں مل جاتے ہیں ابھی وقت ہے حکمران عوامی حقوق کیلئے کچھ  کرلیں۔

آپ کا تبصرہ

Donald Trump's policy towards Pakistan

Donald Trump's; the president of US war of tweets was a fierce attack on Pakistan, accusing the country of "lies and deceit" and making "fools" of US leaders. Trump decla

Read more

loading...