مباحث


  وقت اشاعت: آج 16:27:19

دہشت گردی کا خاتمہ آج ہر پاکستانی کے دل کی آواز ہے اور ایک خواب ہے۔ لیکن بدقسمتی سے سالہاسال کی مشقت کے باوجود اس پر قابو نہیں پایا جا سکا۔ یہ درست ہے کہ گزشتہ سالوں کی نسبت اب بہت کمی واقعی ہوئی ہے لیکن اس کا مطلب یہ ہر گز نہیں ہے کہ دہشت گردی ختم ہوگئی ہے یا یہ کہ دہشت گردوں کی کمر ٹوٹ گئی ہے ۔ سانحہ کوئٹہ جس میں بلوچستان کی وکلا برادری کی فرنٹ لائن قیادت مکمل طور پر شہید ہو گئی تھی، کے بعد سے سہون شریف  کے خودکش حملوں تک یہ بات سامنے آئی ہے کہ دھماکوں میں کمی یا وقفہ ان دہشت گرد تنظیموں کی حکمت عملی ہو سکتی ہے۔  حالیہ دھماکوں سے انہوں نے یہ بتایا ہے کہ وہ اپنے سہولت کاروں اور نیٹ ورک کے ساتھ جوں کے توں موجود ہیں اور جب جی چاہا اپنے  ٹارگٹ کو حاصل کرسکتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 1 دن پہلے 

ایسا معلوم ہوتا ہے کہ پاکستان میں لاقانونیت کا راج ہے۔ مجرموں اور دہشتگردوں کو کھلی چھٹی ملی ہوئی ہے۔  جب کوئی بڑا  دہشتگردی کا واقعہ ہوتا ہے تو حکمرانوں اور آرمی چیف کی طرف سے خانہ پوری کے طور پراپنے گزشتہ بیانات کو دہرادیا جاتا ہے۔  دوسرے مسائل کے ساتھ عوام آئے دن دہشتگردی کا عذاب  بھی بھگت رہے ہیں۔ 

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 1 دن پہلے 

سابق آمرجنرل ضیاءالحق  (جس کو کچھ لوگ جنرل ضیاع بھی لکھتے ہیں) نے اپنے گیارہ سالہ اقتدار کے دور  میں منافقت کے تمام ریکارڈ توڑ ڈالے تھے۔ اقتدار پر ناجائز قابض ہونے سے پہلے تک سگریٹ پیتا تھا لیکن اپنے دورمیں سگریٹ پینا چھوڑ دیا۔ چندروز سائیکل پردفتر جاکر قوم کو بچت کی نصحیت کرنا، شلوار قمیض اور شیروانی پہننا، دکھاوے کی عبادت کرنا، یوم آزادی منانا، اسلامی بینکاری اور دفاتر میں نماز کا وقفہ، یہ سب اعمال منافقت سے جڑے ہوئے تھے۔

مزید پڑھیں

loading...

  وقت اشاعت: 2 دن پہلے 

آگ میں جل کر مرنے کا صرف تصور ہی انتہائی ہولناک ہے لیکن جس پر یہ گزرتی ہے اس کا کیا حال ہوتا ہوگا اور پھر اس کے پیاروں پر کیا گذرتی ہوگی۔ پاکستان میں آئے روز آگ لگنے کے واقعات ہوتے رہتے ہیں جن سے قیمتی جانوں کے ساتھ املاک کا بھی بہت نقصان ہوتا ہے۔ کچھ عرصہ قبل کراچی کے ہوٹل میں آگ لگنے سے متعدد لوگ اپنی جان سے گئے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 2 دن پہلے 

گزشتہ پانچ دنوں میں وطنِ عزیز کی پاک سرزمین کو دہشت گردوں نے خون سے لال کردیا ہے۔ دہشت گردوں نے ملک کے تینوں صوبوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنا کر ہمارے قانون نافذ کرنے والے اداروں اور انتظامیہ کو کھلا چیلنج دیا ہے۔ دہشت گردوں نے پہلے صوبہ پنجاب میں زندہ دلانِ لاہور کو سوگ میں مبتلا کیا۔ ابھی اس حملہ کی گھتی نہیں سلجھ سکی تھی کہ خیبر پختون خواہ دلخراش چیخوں سے گونج اٹھا۔ ان چیخوں کی خراشوں سے ابھی لہو رس ہی رہا تھا کہ سندھ کے شہر اور صوفی حضرت لال شہباز قلندر کے حوالے سے جانا جانے والے شہر سہون شریف کو دہشت گردوں نے خون سے لال کر دیا۔ ایک اندازے کے مطابق اب تک ان دھماکوں میں جاں بحق ہونےوالوںکی تعداد 150 کے لگ بھگ ہے۔  اس سے تین گنا زیادہ تعداد زخمی ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 2 دن پہلے 

گزشتہ پانچ دنوں میں دہشتگردی کے نو واقعات نے پورے پاکستان کو حیران و پریشان کر دیا ہے۔ ہر طرف سوگواری ہے۔ افسوس کی کیفیت پورے ملک پر چھائی ہے۔ گزشتہ دنوں لاہور، کوئٹہ ، پشاور ،  مہمندایجنسی، ڈیرہ اسماعیل، آواران اور سیہون شریف میں لعل شہباز قلندر کے مزار پر دہشتگردی کے واقعات پیش آئے۔ جو انتہائی افسوس ناک اور قابل مذمت ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 3 دن پہلے 

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) پاکستان کی ٹی20 پریمئر لیگ ہے۔ یہ لیگ ٹیموں کے نام کی بجائے شہروں کے نام پر مشتمل ہے۔ ٹیموں کو ’’لاہور قلندرز، اسلام آباد یونائیٹڈ، کراچی کنگز، کوئٹہ گلیڈیٹرز اورپشاور زلمی‘‘ کے نام دیے گئے ہیں۔ اس لیگ کا مقصد بین الاقوامی کرکٹ ٹیموں کو پاکستان میں کھیلنے کےلیے آمادہ کرنا ہے۔ پی ایس ایل کی پانچ فرنچائز کی نیلامی 93 ملین امریکن ڈالر کے عوض دس سال کے لیے کی گئی ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 3 دن پہلے 

15فروری کو تخلیق کاروں کی ایک شان دار تقریب میں شرکت کا موقع ملا۔ اس سے صرف ایک دن قبل تخریب کاروں نے لاہور کو اپنی تخریب کاری کا نشانہ بنایا۔ ایسا سماج جہاں تخریب کاروں کی یہ کوشش ہو کہ وہ تخریب کے ذریعے، تخلیق اور تعمیر کو روک کر اپنی رجعتی اور تخریبی سوچ کو مسلط کرلیں گے، ایسے میں تخلیق کاروں کی یہ تقریب اس پاکستان کا ہراول دستہ ہے جو سماج کو علامہ اقبالؒ اور قائداعظمؒ محمد علی جناح کی فکروفلسفے کے مطابق ایک فلاحی سماج میں بدلنا چاہتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 3 دن پہلے 

انسانی فطرت کا اگر بغور مطالعہ کیا جائے تو یہ بات عیاں ہو جاتی ہے کہ انسان کی جبلت میں یہ بات شامل ہے کہ وہ چاہتا ہے کہ دیگر لوگ اس کی قدرومنزلت اور اہمیت کا اعتراف کریں اگرچہ اس بات میں ابہام ہی ہو کہ وہ شخص واقعی قابل ستائش ہے بھی یا نہیں۔ انسانوں کی ایک واضح اکثریت اپنی اسی فطرت کے باعث خود پسندی اور اپنی بے جا تعریفیں کرنے اور سننے کی خواہش جیسی بیماریوں میں مبتلا نظر آتی ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 4 دن پہلے 

ایک ٹی وی چینل پر پرجوش پریس کانفرنس چل رہی ہے جس میں  دانیال عزیز  پر جوش انداز میں خطاب فرما رہے ہیں۔ وہ عمران خان کے لتے لینے کے ساتھ ساتھ پاکستان کی عدالت عظمی کو قانون بھی سکھا رہے ہیں۔ ان سے کچھ دیر پہلے ایک محترمہ جن کا نام مریم اورنگزیب ہے،  بھی طبع آزمائی فرما چکی ہیں۔ ممکن ہے کہ ان دونوں کے بعد طلال چوہدری  بھی جلوہ افروز ہوں۔ یقین ہے کہ پاکستان کے انتہائی شہرت یافتہ سیاسی شخصیت اور کرکٹ کی تاریخ کے بے تاج بادشاہ عمران خان بھی ان لوگوں سے بھی زیادہ زوردار پریس کانفرنس کریں گے اور عدالت کو یہ بتانے کی کوشش کریں گے کہ وزیراعظم کو سزا دے کر اقتدار سے الگ کرنے کے سوا عدالت کے پاس کوئی اور راستہ ہی نہیں ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 4 دن پہلے 

منظر بدلنے پر آئے تو دیر ہی کتنی لگتی ہے۔ اور منظر اگر درد کی طرح ٹھہر جائے تو وقت کے پل پھیل کر سالوں، دِہایوں اور صدیوں کو حنوط کر دیتے ہیں۔
لاہور کے ایک ہوٹل کے وسیع ہال میں کھچا کھچ بھرے ہال میں شہر کے نامی گرامی صحافی، میڈیا پرسنز، کالمسٹس، سابق جرنیل، سابق سفارتکار اور کئی سیاست دان جمع تھے۔ سننے سے کہیں زیادہ سنانے پر اصرار تھا۔ موضوع ہی کچھ ایسا تھا کہ سنانے والے زیادہ بے تاب تھے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 4 دن پہلے 

مہمند ایجنسی میں اگست 2014 میں دہشتگردوں کی تنظیم  کالعدم تحریک طالبان  پاکستان  (ٹی ٹی پی) سے علیدہ  ہوکر’’جماعت الاحرار الہند” کے نام سے ایک  نئی دہشتگرد تنظیم وجود میں آئی۔ بعد میں اس  دہشتگرد تنظیم کو ’’ جماعت الاحرار‘‘ کے نام سے پکارا جانے لگا۔ اس تنظیم کی قیادت مولوی محمد عمر قاسمی کررہا تھا جو کہ لشکر جھنگوی العالمی کا سربراہ بھی بتایا جاتا تھا۔ مولوی عمر قاسمی سپاہ صحابہ پاکستان کی رکنیت کے بعدمنظر عام پر آیا تھا اور اسے عمر خالدخراسانی کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ جماعت الاحرار پاک افغان سرحدی علاقوں میں سرگرم ایک شدت پسند تنظیم ہے۔ اس تنظیم کے کارکن  خیبر ایجنسی، مہمند ایجنسی اور افغانستان میں پاکستانی سرحد کے ساتھ پائے جانے والے علاقوں میں موجود ہیں،  جبکہ اس جماعت کے سہولت کار اور انٹیلی جنس نیٹ ورک پورے پاکستان کے اندر پھیلا ہوا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 4 دن پہلے 

سانحہ ، حادثہ ، واقعہ ، دھماکہ اور ان ک علاوہ قربانی کے الفاظ بھی استعمال کئے جا سکتے ہیں. لاہور مال روڈ اور لعل شہباز قلندر کے مزار کے دھماکے یقیناً ایک افسوس ناک خبر ہے. لیکن اب اس کا افسوس کب تک منایا جائے گا۔ جب جب ایک ماں کو دھماکے میں شہید ہو جانے والا بیٹا یاد آئے گا، جب ایک بہن کو اس کا بھائی، ایک بیوی کو خاوند اور بچوں کو اپنا باپ یاد آئے گا. جب کبھی زندگی باپ کے بنا مشکل لگے گی، جب کبھی اسکول کی فیس ادا نہ ہوگی، جب کبھی عید کی نماز کے بعد باپ کو عید نہ مل سکے گا ، جب بہن کی شادی پر باپ نہ ہوگا اور خاص طور پر تب جب دنیا میں بنا مقصد کے کوئی محبّت کرنے والا نہ ہوگا ۔۔۔۔ اس کا افسوس تب تک منایا جائے گا.

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 5 دن پہلے 

میرے دوستوں کا حلقہ انتہائی محدود تھا۔ میں نے گورنمنٹ کالج سٹوڈنٹس یونین کی سیکرٹری شپ کے لیے اپنی انتخابی مہم شروع کی تو کسی نے بھی اسے سنجیدگی سے نہیں لیا۔ سب یہ سوچ رہے تھےکہ میں کسی مرحلے پر کنارہ کش ہو جاؤں گا۔ پاپا کوالیکشن میں حصہ لینے کا بتایا تو انہیں نے سختی سے یہ ارادہ ترک کرنے کا مشورہ دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ اس سے میری پڑھائی میں بہت حرج ہوگا ۔ انہیں یہ بھی تشویش تھی کہ ملکی سیاست اور سیاسی جماعتوں کے تعلیمی درسگاہوں میں بڑھتے ہوئے اثرات کے باعث میں کسی جھمیلے میں نہ الجھ جاؤں۔ لیکن میں اپنی ضد پہ اڑا رہا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 5 دن پہلے 

اس خبر کو پڑھ کر مجھے بڑی حیرانی ہوئی اور آپ کو بھی حیرانی ہوگی کہ جہیز کے لالچ میں کس طرح سے بے گناہ عورتوں کو مارا جا رہا ہے اورکس طرح بے قصور مرد بھی اپنی جان دے رہے ہیں ۔عام طور پر یہی سنا جاتا ہے کہ بیچاری عورتوں پر کافی ظلم ہوا ہے یا کمزور عورتوں پر مرد ظلم کر تے ہیں ۔ یوں توبیٹی، بہن، بیوی ، بھابھی اور کبھی کبھی ماں کے متعلق ایسی دکھ بھری باتیں اور کہانیاں سننے کو ملتی ہیں جس سے کلیجہ منہ کو آتا ہے۔ پھر ذہن میں ایک ہی بات آتی ہے کہ مرد کی ذات کافی حیوان صفت ہے جو عورتوں پر ظلم کرتا ہے اور ایسے مرد کو سخت سے سخت سزا ملنی چاہئے۔

مزید پڑھیں

Threat is from inside

Army Chief General Raheel Sharif assured the nation that country’s borders are secure and the army is aware of threats and intrigues of the enemies. Speaking at an even

Read more

loading...