نگر نگر


  وقت اشاعت: 10 جنوری 2018

ہم نے پی ٹی وی کے دور میں آنکھ کھولی۔ ہمارا شعور اس کے سائے میں پروان چڑھا۔ ہم سے زیادہ کون جانتا ہے کہ پروپیگنڈا کیا ہوتا ہے ۔ ہم لوگ ریاستی پروپیگنڈے کے سائے میں پیدا ہوئے ، بڑے ہوئے ۔ ظاہر ہے یہ ہمار انتخاب نہیں تھا۔ ہماری مجبوری تھی، یہ پروپیگنڈا ہم پر مسلط کیا گیا تھا۔ سوشل میڈیا کے دور میں پروان چڑھنے والوں کو، چینل بدلنے کے لیے ہر وقت ریموٹ کنٹرول ہاتھ میں رکھنے والی نسل کو ، شائد یہ بات سمجھ میں نہ آئے کہ پروپیگنڈا مسلط کیسے کیا جا سکتاہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 05 جنوری 2018

ہمارے ہاں سیاست کا ایک اہم نقطہ بحث بد عنوانی ہے ۔ ہر قابل ذکر فورم پر یہ نقطہ زیر بحث ہے ۔ اخبارات کے ادارتی صفحات سے لے کر سوشل میڈیا تک اس موضوع پر ہر طرح کے خیالات کا اظہار ہو رہا ہے ۔ بنیادی طور پر اس مسئلے کا تعلق ہماری سیاسی اخلاقیات سے ہے ۔ اخلاقیات کا سیاست سے گہرا تعلق ہے ۔ علم الاخلاق سیاست کا جزو لاینفک ہے ۔ اخلاقیات کے تابع اور اصولوں پر مبنی سیاست کا تصور مشرق و مغرب میں یکساں مقبول ہے ۔ تیسری دنیا کے کچھ پسماندہ ممالک میں مگر سیاست کاروں اور سیاسی جماعتوں کی کچھ سرگرمیوں سے اس تصور کو شدید دھچکا لگتا رہا ہے ۔ ایسے ممالک میں پاکستان سر فہرست ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 19 2017

یہ ہمارے ماتھے کے لیکھ ہیں۔ یہ ہمارا مقدر ہے ۔ یہ ہماری قسمت ہے ۔ یہ خدا کالکھا ہے ۔ ہماری مصیبتیں، ہماری آ سائشیں، ہمارے غم، ہماری خوشیاں، یہ سب ہمارے نصیب میں لکھا جا چکا ہے جسے ہم بدل نہیں سکتے ۔ طبقاتی تضادات، نا انصافیاں اور نا ہمواریاں زندگی کی حقیقت ہیں۔ زمینی حقائق ہیں۔ ہم نے ان کے ساتھ زندہ رہنا ہے ۔ ان کے ساتھ چلنا ہے ۔ یہ وہ خیالات ہیں جو ہمارے سماج میں عام ہیں اور ہمیں روز مرہ  کی گفتگو میں سنائی دیتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 14 2017

اگر احتساب نہ ہوا تو خدا نخواستہ خونی انقلاب آ سکتا ہے ۔ یہ بات وزیر اعظم پاکستان نے جھنگ میں خطاب کرتے ہوئے دہرائی ہے ۔ یہ وزیر اعظم کے اپنے اوریجنل الفاظ نہیں ہیں۔ یہ الفاظ انہوں نے یا ان کے تقریر نویس نے دوسرے حکمرانوں سے مستعار لیے ہیں۔ یہ الفاظ موجودہ اور ماضی کے کئی حکمرانو ں کا پسندیدہ منتر رہے ہیں۔ مختلف ادوار میں یہ دھمکی نما بیان پاکستان کے مختلف حکمرانوں کی زبان سے تسلسل سے ادا ہوتا رہا ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 04 2017

پاکستان میں دائیں بازو کے دانشور اپنی دانست میں سیکولر ازم کے خلاف لڑائی جیت چکے ہیں۔ اب ان کا اگلا نشانہ لبرل ازم اور لبرل لوگ ہیں۔ یعنی آزاد خیالی اور آزاد خیال لوگ ۔ یہی وجہ ہے کہ کچھ عرصے سے ہمیں اردو ذرائع ابلاغ میں لبرل فاشسٹ، کرائے کے لبرل اور لنڈے کے لبرل جیسے الفاظ کثرت سے دکھائی دینے لگے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 24 2017

فعالیت اور غنڈہ گردی میں فرق ہے ۔ ان دونوں کے درمیان محض کوئی باریک لکیر نہیں جو نظر نہ آئے  یا جسے نظر انداز کیا جا سکے ۔  یہ دونوں بالکل مختلف چیزیں ہیں، جن میں بہت ہی نمایاں فرق ہے۔ مگر ہمارے ہاں ایک عرصے سے ان دونوں چیزوں کو ایک ہی سمجھا جا رہا ہے  یا بزور طاقت ان کو ایک ہی چیز سمجھنے پر مجبور کیا جا رہا ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 31 2017

گزشتہ پانچ سو سالوں نے کئی انقلاب دیکھے ہیں۔ ہماری اس زمین کو واحد ماحولیاتی اور تاریخی کرے میں متحد کر دیا گیا ہے ۔ معیشت نے حیرت انگیز ترقی کی ہے ۔ بنی نوع انسان آج اس دولت سے لطف اٹھا رہا ہے جس کا تصور صرف کہانیوں میں ملتا تھا۔ سائنس اور صنعتی ترقی نے انسان کو بے پناہ طاقت اور توانائی بخش دی ہے ۔ سماجی ڈھانچہ بدل چکا ہے ۔ سیاست بدل چکی ہے ۔ روزمرہ کی زندگی اور انسانی نفسیات بدل چکی ہے ۔ لیکن کیا ہم پہلے سے زیادہ خوش ہیں ۔ دوسرے سینکڑوں سوالوں کے ساتھ یہ وہ اہم سوال ہے جو یول نوا ہریری نے اپنی نئی کتاب بنی نوع انسان کی مختصر تاریخ میں اٹھایا ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 11 جولائی 2017

جون 2015 میں خبر آئی تھی کہ ہالینڈ کی حکومت نے ایک نئے قانون کی تیاری کا حکم دیا ہے جس کے تحت تارکین وطن کو ہالینڈ میں رہنے کیلئے انتہائی سخت امتحان پاس کرنا ہوگا۔ اس نئے قانون سے ہالینڈ میں مقیم کم از کم پانچ لاکھ مسلمانوں کو سخت مشکلات پیش آ سکتی ہیں۔ پھر حکومت کی طرف سے اعلان کیا گیا کہ نیا قانون (سعادت حسن منٹو والا نہیں) تارکین کے امور سے متعلق وزیر ریٹا فرڈونک نے تیار کرکے پارلیمنٹ میں پیش کر دیا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 20 فروری 2017

سابق آمرجنرل ضیاءالحق  (جس کو کچھ لوگ جنرل ضیاع بھی لکھتے ہیں) نے اپنے گیارہ سالہ اقتدار کے دور  میں منافقت کے تمام ریکارڈ توڑ ڈالے تھے۔ اقتدار پر ناجائز قابض ہونے سے پہلے تک سگریٹ پیتا تھا لیکن اپنے دورمیں سگریٹ پینا چھوڑ دیا۔ چندروز سائیکل پردفتر جاکر قوم کو بچت کی نصحیت کرنا، شلوار قمیض اور شیروانی پہننا، دکھاوے کی عبادت کرنا، یوم آزادی منانا، اسلامی بینکاری اور دفاتر میں نماز کا وقفہ، یہ سب اعمال منافقت سے جڑے ہوئے تھے۔

مزید پڑھیں

Donald Trump's policy towards Pakistan

Donald Trump's; the president of US war of tweets was a fierce attack on Pakistan, accusing the country of "lies and deceit" and making "fools" of US leaders. Trump decla

Read more

loading...