نگر نگر


  وقت اشاعت: 3 دن پہلے 

صحافت کو اگر اس کے تمام تر اخلاقی اور صحافتی سنہری ضابطوں اور اصولوں کے ساتھ اپنایا جائے تو اس سے قوموں کی بہترین ذہنی نشو و نما کی جا سکتی ہے۔ اور یہ شعبہ ایک انتہائی فعال کردار ادا کرکے نوجوان نسل کو دورحاضر کے تقاضوں کے مطابق معلومات فراہم کرکے ایک مہذب مقام دلوا سکتا ہے۔ اگر صحافت کے مفہوم کو سمجھا جائے تو اس کا مطلب عوام کو باخبر کرنا ہے لیکن آج کل انہیں گمراہ کیا جا رہا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ صحافت کو بہت زیادہ تنقید کا سامنا ہے اس کی بنیادی وجہ اس شعبے کا شتر بے مہار جیسا کردار ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 6 دن پہلے 

23 مارچ 1971 ڈھاکہ میں وہ آخری سرکاری طور پر منایا جانے والا یوم پاکستان تھا جو موجودہ بنگلہ دیش اور سابقہ مشرقی پاکستان میں منایا گیا ۔
لیکن 1971 میں اس دن صرف ڈھاکہ میں ہی یہ تقریب منعقد ہو سکی چونکہ مشرقی پاکستان تو 3 مارچ 1971 سے ہی بنگلہ دیش قرار دیا جاچکا تھا۔ یہ اور بات ہے کہ 16 دسمبر کو افواج پاکستان کے ہتھیار ڈالنے کے بعد سرکاری طور پر اس کا باقاعدہ اعلان کیا گیا۔  بنگلہ دیش کے ‘بابائے قوم‘ تو خیر کافی بعد میں پاکستانی جیل سے رہا ہوکر بنگلہ دیش پہنچے اور مسند صدارت پر براجمان ہو سکے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 20 مارچ 2017

بزمِ ادب برلن اردو زبان کی ایک فعال تنظیم ہے اور عرصہ 30 سال سے اردو کی بے لوث خدمت کر رہی ہے۔ اس کی کہانی اسٹوڈنٹ ہاسٹل سے شروع ہوکر آج یہاں تک پہنچی ہے۔ اسی تنظیم کے تحت مورخہ 17 مارچ کو مشاعرہ سے قبل عشائیہ کا اہتمام کیا گیا۔ اس کے میزبان سہیل انور خان تھے۔ اس موقع پرمانچسٹر سے نغمانہ کنول ، ان کے شوہر امتیاز شیخ اور سویڈن سے جمیل احسن شامل تھے۔  کانٹیننٹل ریستوراں برلن ویڈنگ میں عشائیہ کے موقع پر نغمانہ کونل کا مجموعہ  کلام ،’’کچھ ادھورا ہے ابھی‘‘ کی تقریبِ رونمائی بھی کی گئی۔ بعد میں نغمانہ کنول، عشرت معین سیما، جمیل احسن اور سرور غزالی نے اپنا کلام سنایا۔ خوبصورت غزلیں، قطعات اور نظموں سے مزین اس خوبصورت شام کاختتام عشائیہ پر ہوا۔

مزید پڑھیں

loading...

  وقت اشاعت: 28 فروری 2017

کسی بھی ملک کی زبان اس ملک کی ترجمان ہوتی ہے۔ اس ملک کی سیاسی، ثقافتی، مذہبی اور معاشرتی زندگی کو سمجھنے کے لئے سب سے بہترین اور بہتر ذریعہ زبان ہوتی ہے۔ اس پر دسترس حاصل کرنے کے بعد معاشرہ میں تیزی سے مدغم ہو کراس ملک کا ایک بہترین شہری بن سکتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 23 فروری 2017

پیسہ کمانا مردوں کا شیوہ ہے۔ پیسہ کمانا جسے نہ آیا وہ مرد نہیں ہے۔ پہلے جب انسان شکار پر ہی گزارا کرتا تھا تو بھی شکار کرکے لانا مردانگی کے زمرے میں شامل تھا۔ بعد کے زمانے میں گرچہ  لفظ کمانا معیوب بھی سمجھا جاتا رہا ہے۔ کمانا دراصل انسانی فضلہ کو صاف کرنے کو بھی کہتے تھے۔ اور کہا جاتا تھا کہ کیا آج جمعدار کما گیا ہے۔  

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 23 فروری 2017

ہرسال 21 فروری کو مادری زبانوں کا عالمی دن منایا جاتا ہے ۔ اس دن کا بنیادی مقصد دنیا بھر کے افراد کی طرف سے بولی جانی والی زبانوں کی حفاظت اور ان کا فروغ ہے۔ اس حوالے سے دنیا بھر میں نہ صرف علمی سیمینارز منعقد کئے جاتے ہیں بلکہ ہر ملک کی مقامی زبانوں کے تحفظ کے لئے احتجاجی ریلیاں بھی نکالی جاتی ہیں، جس میں حکومت وقت سے زبانوں کے فروغ اور ان کے تحفظ کا مطالبہ کیا جاتا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 21 فروری 2017

دہشت گردی کا خاتمہ آج ہر پاکستانی کے دل کی آواز ہے اور ایک خواب ہے۔ لیکن بدقسمتی سے سالہاسال کی مشقت کے باوجود اس پر قابو نہیں پایا جا سکا۔ یہ درست ہے کہ گزشتہ سالوں کی نسبت اب بہت کمی واقعی ہوئی ہے لیکن اس کا مطلب یہ ہر گز نہیں ہے کہ دہشت گردی ختم ہوگئی ہے یا یہ کہ دہشت گردوں کی کمر ٹوٹ گئی ہے ۔ سانحہ کوئٹہ جس میں بلوچستان کی وکلا برادری کی فرنٹ لائن قیادت مکمل طور پر شہید ہو گئی تھی، کے بعد سے سہون شریف  کے خودکش حملوں تک یہ بات سامنے آئی ہے کہ دھماکوں میں کمی یا وقفہ ان دہشت گرد تنظیموں کی حکمت عملی ہو سکتی ہے۔  حالیہ دھماکوں سے انہوں نے یہ بتایا ہے کہ وہ اپنے سہولت کاروں اور نیٹ ورک کے ساتھ جوں کے توں موجود ہیں اور جب جی چاہا اپنے  ٹارگٹ کو حاصل کرسکتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 12 فروری 2017

  یہ 28جنوری کی ایک انتہائی سرد صبح تھی اور صبح کے چار بجنے کو تھے جب ہم جرمنی سے بلجیم کے لئے روانہ ہوئے ہماری منزل بر سلز تھی مجھے ایک بار پھر افنان خان کی رفاقت میسر تھی اس سے پہلے ہم دونوںبنکاک کا بھی یاد گار سفر کر چکے تھے خان کا تعلق بڑے انگریزی اخبار سے ہے اور ایک دبنگ انٹر نیشنل صحافی ہیں جس کا قلم انسانی حقوق ، انسانیت اور انسانی اقدار کے لئے ہی وقف ہے باتیں کرتے کرتے سفر کا کچھ پتہ نہ چلا بی ایم ڈبلیو سپورٹس گاڑی نے پانچ گھنٹے کا سفر ساڑھے تین گھنٹے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 07 فروری 2017

کسی فرد کو حفاظتی اقدامات کے طور پر  یا اس کی شرارتوں سے تنگ آکر نظر بند کر دیا جانا بھی اپنی نوعیت کی انوکھی ایجاد ہے۔  بچپن میں دوسرے بچوں سے سنا تھا کہ انہیں سزا کے طور پر گھر سے نکال دیا جاتا ہے لیکن ہمارے اپنے گھر کی  روایت یہ تھی کہ کمرے سے باہر نکلنے پر پابندی لگادی جاتی تھی۔ تب ہماری بہت خواہش  ہوتی کہ کاش ہمیں بھی گھر سے باہر نکالا جاتا تو سزا کے دوران کچھ سیر سپا ٹے سے لطف اندوز ہی ہوتے۔ ایسی کسی سزا کی والدین کی طرف سے نہ نافذ کر نے کا نقصان یہ ہوا کہ صرف اٹھارہ سال کی عمر میں ہم باہر نکل گئے۔ باہر کے ملکوں میں بھی یہی دیکھا کہ بچوں کو سزا ہاؤس اریسٹ کی صورت میں ہی دی جاتی ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 30 جنوری 2017

برسلز شہر کی کئی  شناخت ہیں۔ یہ بیلجیئم کا دارلحکومت ہے۔ یہاں نیٹو کا ہیڈ کواٹر بھی ہے۔ اور یہ یورپین پارلیمنٹ کی آماجگاہ بھی۔ یعنی یورپین یونین کا دراحکومت۔ وہ ملک جو کبھی تقسیم ہوا تو کبھی زیر نگیں رہا۔ آج  انہی تمام ملکوں کا دارالحکومت ہے جو کبھی اس کی شکست و ریخت کے ذمہ دار تھے۔ اس لحاظ سے یہ ایک عالمی رابطے کا شہر ہے۔ گزشتہ دنوں یہاں کا پریس کلب ایسے ہی عالمی رابطے کے مرکز بنا ہوا تھا۔ 

مزید پڑھیں

Threat is from inside

Army Chief General Raheel Sharif assured the nation that country’s borders are secure and the army is aware of threats and intrigues of the enemies. Speaking at an even

Read more

loading...