نگر نگر


  وقت اشاعت: 4 دن پہلے 

معروف ٹی وی اینکر ڈاکٹر شاہد مسعود المعروف دبڑ دُوس ، ڈاکٹر کم اور مولوی زیادہ ہیں اور پُورے تزک و احتشام سے اپنی مولویت میں رہتے ہیں ۔ وہ ایک عرصے سے وقت کے خاتمے پر تحقیق کر رہے ہیں اور اس سلسلہ میں اُن کی کتاب " دی اینڈ آف ٹائم" بھی شائع ہو چکی ہے ۔ اس بار رمضان کے دوران اُن کا " دی نیوز ون" پر چلنے والا  رمضان شو ، جس میں انعامات کی بارش ہوئی  اور عمروں کے ٹکٹوں کے تحفے تقسیم کیے گئے، بہت مقبول ہوا ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 19 جون 2017

پوری پاکستانی قوم کو مبارک ہو۔ ہمارے شاہینوں نے وہ تاریخ رقم کی جس کا کسی کو یقین نہیں تھا۔  بہت سے ماہرین اور دانشور پاکستان کرکٹ ٹیم کی اس کامیابی پر اپنے اپنے انداز میں لکھیں گے۔ ان میں وہ بھی  ہوں گے جو واقعی کرکٹ کے رموز سے واقفیت رکھنے والے ہیں ، وہ بھی جنہوں نے خود کرکٹ کھیلی ہوگی یا کسی نہ کسی طرح کرکٹ سے وابستگی رہی ہوگی اور وہ بھی جنہوں نے شاید کبھی ٹی وی پر بھی کرکٹ میچ نہیں دیکھا ہوگا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 18 جون 2017

پاکستان میں کامیاب بزنس مین بننے کے لیے اقتدار میں ہونا ضروری ہے یا پھر بطور سیاستدان اتنا موثر ہونا لازمی ہے جتنے مولانا فضل الرحمان، تاکہ شیر کے مونہہ سے اپنے حصے کا نوالہ چھینا جا سکے ۔ رزق یقیناً خُدا تعالیٰ کی طرف سے ہے لیکن اُس کی تقسیم کا ذمہ اور اختیار انسانوں کو دیا گیا ہے۔  اور انسان چاہیں تو خُدا کے اُتارے ہوئے رزق کو ، اُس کی عطا اور امانت سمجھ کر اُس کی رضا  کے لیے اور شریعت کے قانون کے مطابق خرچ کریں یا اسراف کرنے والوں کی طرح اللہ کے عطا کردہ رزق کو اپنے اللوں تللوں کی مد میں گل چھرے اُڑا کر حرام میں گنوا دیں ۔

مزید پڑھیں

loading...

  وقت اشاعت: 17 جون 2017

میں نے اپنے پچھلے کالم میں لوگوں اور ارباب اختیار کی توجہ پاناما سے ہٹا کر عوامی نوعیت کے کچھ اہم مسائل کی طرف مبذول کرانے کی کوشش کی تھی۔ لیکن پاناما کا مقدمہ اب ریٹنگ کے تمام ریکارڈ توڑ کر شہرت کی بلندیوں پر ہے۔  دونوں فریقین کے چاہنے والے اور تیسری چوتھی لائن میں کھڑی قیادت اپنے اپنے لنگوٹ کس کر میدان میں موجود ہے۔ کچھ لوگ سیاسی جماعتوں میں دوسری لائن کی قیادت کا ذکر کرتے رہتے ہیں لیکن میرے خیال میں صرف پاکستان تحریک انصاف وہ واحد جماعت ہے جس میں دوسری لائن کی قیادت موجود ہے اور پر امید ہیں کہ جب تک اقتدار ان تک پہنچتا اس وقت تک وہی پہلی لائن پر ہوں گے۔ باقی سب جماعتوں میں دوسری لائن ہی نہیں کیوں کہ یہ خلا ان کی اولادیں یا خاندان والے پر کرتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 15 جون 2017

ایک دن وہ تھا جب پاکستان کی کرکٹ ٹیم انڈیا سے ہار گئی تو تو پورا پاکستان بشمول سابق کرکٹرز ٹیم پر لعن طعن کرتے ہوئے طرح طرح کی بولیاں بول رہے تھے ۔ تو میں نے کسی جگہ اپنے کمنٹس میں لکھا تھا کہ سوچو اگر یہی پاکستان کی ٹیم فائنل میں چلی گئی تو پھر آپ کیا کہیں گے۔   اب ٹیم نے وہ کر دکھایا جس کی کسی کو بھی توقع نہیں تھی ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 10 جون 2017

مذہب زندگی کا روڈ میپ ہے ۔ یہ خُدا کاقانون ہے جس کا ظاہر شریعت اور باطن محبّت ہے ۔
ہم مذہب اس لیے اختیار کرتے ہیں ، تاکہ محبّت کرنا سیکھ سکیں اور محبّت اس لیے کرتے ہیں  تاکہ مذہب کی حقیقت پوری تفصیل کے ساتھ جان سکیں  ۔ زندگی کو محبت کے سوا کسی رہنمائی یا سبق کی ضرورت نہیں  ۔
لیکن یہ کون ہے جو محبت کا سزاوار ہے ۔ اِس کو جاننے ، محبوب کو پہچاننے اور کسی بھی گمرہی سے بچنے کے لیے استاد جلال الدین رومی نے ایک اشارہ دیا ہے ۔ فرماتے ہیں :
سورہ ء رحماں بخواں اے مبتدی

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 03 جون 2017

نوازشریف اورآصف زرداری کو ڈاکو اورچور جیسے القابات سے مخاطب کرنا عمران خان کے سیاسی کھیل کا اٹیک باؤنسر رہا ہے۔ مگرعوام عمران خان سے یہ پوچھنے کا حق رکھتے ہیں کہ ڈاکوؤں اور چوروں کے جمگھٹے میں چہچہانے والا، ان کی کرپشن کو ڈرائی کلین کرکے لوٹ مار کی دولت سے سیاست چمکانے والا کس لقب سے نوازا جانا چاہئے۔ یہاں تو صرف یہ کہا جا سکتا ہے کہ پاکستانی سیاسی حمام میں سب ہی ننگے ہیں۔ سب نے ایک دوسرے کو بے لباس کیا اور اب ستر پوشی کے لئے کسی کے پاس کچھ نیہں بچا۔ 

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 03 جون 2017

عجیب مخمصہ ہے ۔ نظریے کا خار زارعبور کر کے ستر برس قبل  ہم پاکستان آئے اور   آج ستر برس بعد بھی  پاکستان کی تلاش میں ہیں ۔ وہ ملک  ہے کہاں جو ایک قوم  نے برِ صغیر  ہند میں مذہب کی بنیاد پر  حاصل کیا تھا ۔ جس کا مطلب ایک نعرے میں لا الہ الاللہ بیان کیا گیا تھا ۔ کیا یہ سڑکوں کے جال ، یہ  اوررنج بسیں ،  یہ لوڈ شیڈنگ کے خلاف احتجاج کرتے غریب مسلمان  کسی خوش حال معیشت اور مستحکم قومی روایت کی علامات ہیں ۔ کیا یہی ہے وہ پاکستان؟

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 02 جون 2017

یوں تو اسے خواب نگری کہنا چاہئے تھا کیونکہ اس بستی کے سارے باشندے خوابوں میں زندگی بسر کرتے تھے۔ مگر نہ جانے یہ حاسدوں کے پروپیگنڈے کا اثر تھا یا کسی احمقانہ طرز عمل کا نتیجہ کہ سب اس جگہ کو شیخی نگر کہنے لگے تھے اور وہاں کے باشندوں کے بارے میں شیخ چلی کا لفظ استعمال کیا جاتا تھا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 01 جون 2017

پچھلے کئی مہینوں سے میرے وطن میں ہر طرف پانامہ کا شور مچا ہوا تھا اور پھر پانامہ  پر عدالتی فیصلہ آیا تو میڈیا کو ایک نیا کھیل میسر آگیا۔  ہر کوئی فیصلے پر خوش بھی تھا اور غمگین بھی۔  فیصلے سے کسی کی بھی خواہش پوری نہیں ہوئی اور سب نے مٹھائیاں بھی تقسیم کیں۔ ابھی یہ تماشا  جاری تھا کہ اوپر سے ڈان لیکس کھیل شروع ہو گیا ۔ صد شکر کہ اس کی دھول کچھ بیٹھ گئی ہے۔ لیکن پانامہ کا نیا ایڈیشن جاری ہے اور ہمارے سارے سیاستدان اور میڈیا پانامہ پر سوار ہو کر اپنی اپنی اڑان میں بازی لے جانے کی کوشش میں مصروف ہیں۔

مزید پڑھیں

Conflicts in Conflict

The conflict of Jammu and Kashmir (J&K) is one of the long standing issues of the world. The unfortunate but this unique multi-ethnic, multilingual and multi-religious po

Read more

loading...