نگر نگر


  وقت اشاعت: 7 دن پہلے 

14 جون کی رات 12:54 پر شمالی کینزنگٹن علاقے کی گرین فل ٹاور میں آگ لگنے سے لگ بھگ ساٹھ لوگوں کی جان چلی گئی۔ 74 لوگوں کی حالت نازک ہے جنہیں لندن کے مختلف ہسپتالوں میں داخل کیا گیا ہے۔ جبکہ 70سے زیادہ لوگ لاپتہ ہیں۔ اس حادثے کی خبر کو برطانیہ سمیت دنیا کے تمام ملکوں میں نشریات کیا گیا اور لندن میں اس خبر کا ردّعمل کا فی جارحانہ رہا ۔ کہا جا رہا ہے دوسری جنگِ عظیم کے بعد ایسا پہلی بار دیکھنے کو ملا جب اتنے بڑے پیمانے پر کسی عمارت میں آگ لگی ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 7 دن پہلے 

اندرا گاندھی سے شملہ میں مذاکرات کے لئے جانے سے پہلے صدر پاکستان ذولفقار علی بھٹو نے زندگی کے مختلف شعبوں کے نمائندوں سے ملاقاتیں کیں۔ طلبہ کے جن چند نمائندوں کو بلایا گیا ان میں محمد اشرف عظیم اور میں بھی شامل تھے۔ ہم گورنمنٹ کالج لاہور کی طلبا یونین کے  بالترتیب، صدر اور سیکرٹری تھے۔ یہ ملاقات مری کے گورنر ہاؤس میں ہونا قرار پائی۔ ہمارے سفر اور وہاں قیام کے انتظامات لاہور کے اسسٹنٹ کمشنر رضا کاظم نے کئے۔ 18جون 1972کو ہم وقت مقررہ پہ گورنر ہاؤس پہنچے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 13 جون 2017

یہ اس دور کی بات ہے جب میں اپنی والدہ کے ساتھ خواتین کی مجالس میں جا سکتا تھا۔ ایک مجلس میں ہم وقت سے ذرا پہلے پہنچ گئے۔ ایک خاتون قسمت کا حال بتا رہی تھیں۔ انہوں نے اپنی انگلیوں سے میرے ماتھے کی جلد کو سکیڑ کر نمایاں ہونے والے بل بغور دیکھے اور کچھ دیر سوچ کے، گویا فیصلہ سنانے والے انداز میں کہا: ’’یہ جج بنے گا!‘‘ باجی (ہم اپنی والدہ کو باجی کہتے تھے) خوش ہوگئیں۔

مزید پڑھیں

loading...

  وقت اشاعت: 13 جون 2017

9 جون کوبرطانیہ کے عام چناؤ کا نتیجہ سامنے آیا تو کنزر ویٹو پارٹی کو شدید دھچکا پہنچا۔ وزیر اعظم تھریسا مے جو کہ کنزرویٹو پارٹی کی لیڈر بھی ہیں، انہوں نے دوماہ پہلے اچانک الیکشن کا اعلان کیا تھا۔ اس کی ایک وجہ یہ تھی کہ انہیں اس بات کا یقین تھا کہ ان کی پارٹی بھاری اکثریت سے کامیاب ہوگی۔ لیکن جب نتیجہ سامنے آیا تو تھریسا مے کے ساتھ ساتھ ان کی پارٹی کے کئی بڑے لیڈروں کے ہوش اُڑ گئے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 07 جون 2017

انسانی جان لینا اتنا آسان کام ہوگیا ہے جسے سوچ کر انسانیت شرمندہ  ہوجاتی ہے۔ پچھلے کچھ برسوں سے دنیا کے کئی ممالک میں انتہا پسندی اور دہشت گردی کے نام پر ایک نہیں لاکھوں انسانوں کو مار ڈالا گیا ہے۔ پہلے یہ کام مشرق وسطیٰ میں عام تھا اب یہ یورپ، امریکہ ، افریقہ اور ایشیا میں بھی ہونے لگا ہے۔ آئے دن دنیا کے کسی نہ کسی ملک سے دہشت گردی کی ایسی خبر آتی ہے جس کو سوچ کر انسان اپنی شرافت اور انسانیت پر شرمندہ ہوتا ہے۔ کچھ پل کے لئے انسان اس بات کو سوچنے پر مجبور ہو جاتا ہے کہ کیوں ایک انسان دوسرے انسان کی جان لے رہا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 31 مئی 2017

راوی کی ادارت
گورنمنٹ کالج لاہور کے ادبی مجلے’راوی‘ کا مدیر سال ششم سے، شریک مدیر پنجم اور ایک ایک نائب مدیر چہارم اور سوم سے لیا جاتا تھا۔ میں جب سال سو م میں پہنچا تو میں نے اس اسامی کے لئے درخواست دی۔ میری غزلیں ’راوی‘ میں اور قطعات کالج گزٹ میں شائع ہوتے رہے تھے۔ میں ’مجلس اقبال‘ کی مجلس عاملہ کا رکن تھا اور انٹر کالجیٹ مشاعروں میں کالج کی نمائندگی کر کے متعدد انفرادی انعامات اور کالج کے لئے ٹرافیاں حاصل کر چکا تھا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 30 مئی 2017

27 مئی کے رات گیارہ بجے سنجے گپتا جی کا فون آیا کہ ’ کل انڈیا اور نیوزی لینڈ کا وارم اپ میچ ہے ۔کیا آپ میرے ساتھ چلے گے‘ ۔ میں نے بھی بلا جھجھک سنجے بھائی کو اپنی رضامندی دے دی اور اتوار کی صبح دس بجے لندن کے مشہور اور تاریخی (Oval) اوول گراؤنڈ پہنچنے کا وعدہ کر لیا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 18 مئی 2017

جمعہ 19 مئی کو ایران میں صدارتی الیکشن ہوگا۔ ہر بار کی طرح اس بار بھی الیکشن کی کافی سرگرمی  پائی جا رہی ہے۔ ایران مسلم آبادی والے ان چند ممالک میں  ایسا ملک ہے جو اپنے وقار ، روایت اور پارلیمانی نظام کے لئے اعلیٰ مانا جاتا ہے۔ اگر دیکھا جائے تو زیادہ تر مسلم آبادی والے ممالک میں پارلیمانی نظام کا قیام ہونے کے باوجود جمہوریت کی اہمیت کو نظر انداز کیا جاتا ہے۔ زیادہ ترعرب ممالک میں اب بھی شاہی یا خاندانی حکومت قائم ہے اور وہاں کے لوگوں میں جمہوریت سے کم دلچسپی ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 16 مئی 2017

مشرقی پاکستان میں مشاعرے
پاپا کو ڈھاکہ، سلہٹ اور چاٹگام میں منعقد ہونے والے مشاعروں میں شرکت کی دعوت ملی۔ منتظمین نے پی آئی اے کا ٹکٹ بھیجا جو دو سو دس یا بیس روپے کا تھا۔ اُس وقت لاہور سے کراچی کا کرایہ بھی تقریباً اتنا ہی تھا۔ منٹگمری (موجودہ ساہیوال) تک ریل کا انٹر کلاس کا ٹکٹ غالباً چار پانچ روپے تھا۔ ہم انہیں ائرپورٹ چھوڑنے گئے۔اُن دنوں مسافروں کو الوداع یا خوش آمدید کہنے والے، جہاز کے اتنے قریب جا سکتے تھے کہ انہیں آواز دے کے بلا سکتے تھے۔ اُس دن ہم نے احمد ندیم قاسمی اور قتیل شفائی کو پہلی بار دیکھا۔ پاپا کی واپس آمد پر جب جہاز کا دروازہ کھلا تو چند مسافروں کے بعد پاپا نظر آئے۔ اُن کے ہاتھ میں ڈوریوں سے لٹکی ہوئی ایک چاٹی دیکھ کے ہم حیران ہوئے۔ گھر پہنچ کے اُس میں سے جو مٹھائی نکلی اُس کی لذت مدتوں زبان پہ رہی۔ چاٹی میں کیلے کے پتوں سے تہیں بنا کے مختلف اقسام کی مٹھائیاں رکھی گئی تھیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 09 مئی 2017

جب ہم یہ سنتے ہیں کہ کسی کی شادی اس کے قریبی رشتہ دار سے ہوئی ہے توہم  خوشی کا اظہار کرتے ہیں اور مبارک باد پیش کرتے ہیں۔ پرانے زمانے میں یہ بات بہت عام ہوا کرتی تھی جب بزرگوں کی ضد پروہ اپنے خاندان کے ہی کسی رشتہ دار کے بیٹے یا بیٹی کا ہاتھ مانگ لیتے تھے۔ خاندانی وقار اور روایت پر ایسی کئی شادیوں کی مثالیں دیکھنے کو ملتی ہیں۔ پھر جیسے جیسے زمانہ بدلتا گیا اور بزرگوں کی باتوں کی اہمیت ختم ہونے لگی تو لڑکے اور لڑکیاں اپنے رشتہ داروں کو پسند کرکے شادیاں کرنے لگے۔ گویا کہ رشتہ داروں کے بیچ شادی کا چلن  بدستور جاری رہا۔

مزید پڑھیں

Conflicts in Conflict

The conflict of Jammu and Kashmir (J&K) is one of the long standing issues of the world. The unfortunate but this unique multi-ethnic, multilingual and multi-religious po

Read more

loading...