نگر نگر


  وقت اشاعت: 5 دن پہلے 

جمعہ 19 مئی کو ایران میں صدارتی الیکشن ہوگا۔ ہر بار کی طرح اس بار بھی الیکشن کی کافی سرگرمی  پائی جا رہی ہے۔ ایران مسلم آبادی والے ان چند ممالک میں  ایسا ملک ہے جو اپنے وقار ، روایت اور پارلیمانی نظام کے لئے اعلیٰ مانا جاتا ہے۔ اگر دیکھا جائے تو زیادہ تر مسلم آبادی والے ممالک میں پارلیمانی نظام کا قیام ہونے کے باوجود جمہوریت کی اہمیت کو نظر انداز کیا جاتا ہے۔ زیادہ ترعرب ممالک میں اب بھی شاہی یا خاندانی حکومت قائم ہے اور وہاں کے لوگوں میں جمہوریت سے کم دلچسپی ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 7 دن پہلے 

مشرقی پاکستان میں مشاعرے
پاپا کو ڈھاکہ، سلہٹ اور چاٹگام میں منعقد ہونے والے مشاعروں میں شرکت کی دعوت ملی۔ منتظمین نے پی آئی اے کا ٹکٹ بھیجا جو دو سو دس یا بیس روپے کا تھا۔ اُس وقت لاہور سے کراچی کا کرایہ بھی تقریباً اتنا ہی تھا۔ منٹگمری (موجودہ ساہیوال) تک ریل کا انٹر کلاس کا ٹکٹ غالباً چار پانچ روپے تھا۔ ہم انہیں ائرپورٹ چھوڑنے گئے۔اُن دنوں مسافروں کو الوداع یا خوش آمدید کہنے والے، جہاز کے اتنے قریب جا سکتے تھے کہ انہیں آواز دے کے بلا سکتے تھے۔ اُس دن ہم نے احمد ندیم قاسمی اور قتیل شفائی کو پہلی بار دیکھا۔ پاپا کی واپس آمد پر جب جہاز کا دروازہ کھلا تو چند مسافروں کے بعد پاپا نظر آئے۔ اُن کے ہاتھ میں ڈوریوں سے لٹکی ہوئی ایک چاٹی دیکھ کے ہم حیران ہوئے۔ گھر پہنچ کے اُس میں سے جو مٹھائی نکلی اُس کی لذت مدتوں زبان پہ رہی۔ چاٹی میں کیلے کے پتوں سے تہیں بنا کے مختلف اقسام کی مٹھائیاں رکھی گئی تھیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 09 مئی 2017

جب ہم یہ سنتے ہیں کہ کسی کی شادی اس کے قریبی رشتہ دار سے ہوئی ہے توہم  خوشی کا اظہار کرتے ہیں اور مبارک باد پیش کرتے ہیں۔ پرانے زمانے میں یہ بات بہت عام ہوا کرتی تھی جب بزرگوں کی ضد پروہ اپنے خاندان کے ہی کسی رشتہ دار کے بیٹے یا بیٹی کا ہاتھ مانگ لیتے تھے۔ خاندانی وقار اور روایت پر ایسی کئی شادیوں کی مثالیں دیکھنے کو ملتی ہیں۔ پھر جیسے جیسے زمانہ بدلتا گیا اور بزرگوں کی باتوں کی اہمیت ختم ہونے لگی تو لڑکے اور لڑکیاں اپنے رشتہ داروں کو پسند کرکے شادیاں کرنے لگے۔ گویا کہ رشتہ داروں کے بیچ شادی کا چلن  بدستور جاری رہا۔

مزید پڑھیں

loading...

  وقت اشاعت: 05 مئی 2017

اردو زبان کی سب سے بڑی خوبصورتی یہ ہے کہ اس میں شہد جیسی مٹھاس ہے تو اس میں محبوب کی ادائیں بھی ہیں۔ میں اردو زبان کا خادم ہونے کے ناطے ہمیشہ اس کے فروغ اور بقا کے لئے اپنے طور پرجو کچھ بھی کر سکا میں نے کیا۔ شاعری کا شوق بچپن سے تھا۔ اچھے شاعر اور شاعری کی ہم نے حوصلہ افزائی اور ستائش کی ہے۔ کبھی کبھی اردو شاعری کو سن کر ایسا محسوس ہوتا ہے جیسے کوئی زخم کو پروں سے سہلا رہا ہو۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 30 اپریل 2017

پچھلے دنوں بی بی سی کے ویب سائٹ پر ہندوستان کی ایک خاتون سائرہ بانو کی طلاق اور اس بارے میں سپریم کورٹ کے کیس کے بارے میں خبر کو پڑھ کر افسوس  ہوا۔ آج کے دور میں اسلام  کے خلاف جس طرح سے پروپگنڈا کیا جا رہا ہے اس سے زیادہ تر مسلمان واقف ہیں ۔ افسوس ناک بات یہ ہے کہ طلاق کے طریقہ کار کو مذاق بنا دیا گیا ہے لیکن دُکھ اس بات کا بھی ہے کہ اسلام  کے متعلق جس طرح باتوں کو توڑ موڑ کر پیش کیا جا رہا ہے اس سے صاف ظاہر ہورہا ہے کہ ان تمام باتوں کے پیچھے ایک خاص گر وپ سر گرم ہے ۔ جو کسی نہ کسی بہانے اسلامی احکامات اور اس سے منسلک باتوں کو اس طرح پیش کر رہاہے جس سے لوگوں کے جذبات کوٹھیس پہنچے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 27 اپریل 2017

پچھلے ہفتے برطانوی وزیر اعظم تھریسا مے نے اچانک ٹیلی ویژن پر آکر 8 جون کو جنرل الیکشن کا اعلان کر دیا جو کہ مقررہ وقت  تین سال قبل ہے۔ اس کے بعد پورے برطانیہ میں اس خبر پر بحث اور چرچا ہو نے لگی۔ تھریسا مے نے اپنی مختصر تقریر میں کہا کہ ’ یوروپین یونین میں رہنے اور باہر ہونے کے ریفرینڈم کے بعد ملک کو عین الیقین، پائیداری اور مضبوط لیڈر شپ کی ضرورت ہے۔ تھریسا مے نے مزید  کہا کہ ملک اس بات پر اتفاق کر چکا ہے لیکن ویسٹ منسٹر نے نہیں کیا ہے۔ ویسٹ منسٹر برطانوی پارلیمنٹ کو کہتے ہیں ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 25 اپریل 2017

چند برس ہوئے پاکستان کے ایک بڑے انگریزی اخبار نے سو نامور پاکستانیوں کے پر وفائلز پہ مبنی خصوصی شمارہ شائع کیا۔ شخصیات کی اس فہرست میں سیاست دان اورحکمران حاوی تھے لیکن شاعروں ادیبوں، فنکاروں اور کھلاڑیوں کی ایک قابل ذکر تعداد بھی تھی۔ یہاں ناصر کاظمی کی موجودگی پہ مجھے دلی خوشی ہوئی لیکن سلطان خان کو نہ پا کر باقاعدہ رنج ہوا۔ یہ ٹھیک ہے کہ ان کے کارہائے نمایاں تقسیم سے پہلے سرانجام دئے گئے تھے لیکن ان کا تعلق پاکستان کے شہر سرگودھا سے تھا جہاں انہوں نے تمام زندگی گزاری۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 19 اپریل 2017

اتوار 16اپریل کو امریکہ سمیت یورپ کے کئی ممالک کی نگاہ ترکی کے ریفرنڈم پر لگی ہوئی تھی۔ دراصل یہ ریفرنڈم ترکی کے آئین میں اٹھارہ مجوزہ ترامیم کے لئے کروایا گیا تھا۔ جس کا اعلان ترکی کے صدر رجب طیب اردوان نے کیا تھا۔ اس لئے کئی معنوں میں اس ریفرنڈم کو کافی اہم مانا جارہا تھا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 12 اپریل 2017

میں نے اس بات کو ہمیشہ محسوس کیا ہے کہ زیادہ تر مسلمان کو صرف نام اور اس کے خد و خال سے پہچانا جاتا ہے ۔ آج کل پوری دنیا میں جس طرح سے مسلمانوں کے خلاف ایک خاص سازش کے تحت انہیں بدنام کرنے کی کوشش کی جارہی ہے اس سے اس بات کا احساس ہوتا ہے کہ مسلمان ہونے کے لئے صرف مسلم نام کا ہونا ہی کافی ہے۔ اگر تھوڑی دیر کے لئے آپ ہندوستانی فلم انڈسٹری کی مثال لیں تو آپ کو میری بات سمجھنے میں دشواری نہیں ہوگی۔ ہم نے بچپن سے ہندوستانی فلموں میں یہ دیکھا ہے کہ ایک بدنام کردار کو فلموں میں جب دکھایا جاتا ہے تو اس کی شکل پر داڑھی ضرور ہوتی ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 06 اپریل 2017

دنیا جب سے قائم ہوئی ہے انسان نے اپنے دولت اور طاقت سے غلام بنانے کی ر وایت کو قائم رکھا ہے۔ جس کا نتیجہ یہ ہے کہ آج دنیا ترقی کرنے کے بعد بھی انسانوں کو غلامی کی زنجیر سے آزاد نہیں کرا پائی ہے۔ ابتدائی دور میں انسان اپنی لا علمی، رنگت، ذات و پات، جسمانی معذوری اور غریبی وغیرہ کی وجہ سے غلام بنتا تھا۔ لیکن جوں جوں زمانہ ترقی گزرتا گیا اس میں بہت حد تک تبدیلیاں بھی آنے لگی۔ مثلاً ان حالات کے تحت انسان اب غلامی کی زندگی نہیں گزار رہا ہے۔ لیکن اب بھی دنیا کے بیشتر ممالک میں انسان اپنی غریبی اور مجبوری کی وجہ سے غلامی کی زندگی گزار رہے ہیں۔

مزید پڑھیں

Islamic Council Norway Fails Muslims and the Society

By hiring Nikab-wearing Leyla Hasic, Islamic Council Norway has taken a clear stand in a controversial debate. Norwegian Muslims neither are represented nor served with t

Read more

loading...