شہر شہر


  وقت اشاعت: 11 جنوری 2018

قصور میں ننھی زینب کے ساتھ رونماہونے والا المناک سانحہ اورپھراسے بے دردی کے ساتھ قتل کرکے لاش کا کوڑے کے ڈھیر پرپھینک دیاجانا ایک ایسااندوہناک واقعہ ہے کہ جس کے بارے میں بات کرنے کے لئے بہت حوصلہ چاہیے اور بہت ہمت چاہیے۔ لیکن اس معاشرے میں پے درپے رونما ہونے والے ایسے شرمناک واقعات نے ہمیں بہت ساحوصلہ بھی دیدیا ہے اورہم میں ظلم سہنے کی ہمت بھی بہت پیداہوچکی ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 02 2017

کوئی ایک ماہ سے دھرنے کا کھیل جاری تھا ۔ ہم اس دوران خاموش رہے ۔ اور اس لئے خاموش رہے کہ یہ عقائد کا معاملہ تھا ۔ پھر ایک ناکام آپریشن ہوا ہم خاموشی سے سب کچھ دیکھتے رہے ۔ آپریشن کی ناکامی کے بعد ایک کامیاب اور ” بے مثال “ معاہدہ ہوا ، قانون شکنی کے مرتکب افراد کو تھانوں سے نکال کر انہیں لفافے دیئے گئے ۔ اس عمل کی وڈیو بھی بنائی گئی ۔ ہمیں ” لفافہ دھرنا “ کی اصطلاح تو سوجھی مگر ہم پھر بھی چپ رہے کہ جب لفافے والی صحافت بھی اب مضبوط بنیادوں پر استوار ہو چکی اور اس پر کوئی اعتراض بھی نہیں کرتا تو لفافہ دھرنے کا ویڈیو کے ذریعے باضابطہ اعلان کرنا بھی کوئی بری بات نہیں ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 28 2017

ہمارے پیارے پیغمبر حضرت محمد مصطفی احمد مجتبی ﷺ 12 ربیع الاول بروز 2 شنبہ (سوموار ) مطابق اپریل570 میں مکہ مکرمہ میں صبح صادق کے وقت والدہ ماجدہ سیدہ آمنہ کے بطن مبارک سے یتیمی کے عالم میں ظہور پزیر ہوئے ۔اور 12 ربیع الاول بروز سوموار 11 ہجری 63 برس عمر مبارک پا کر مدینہ منورہ میں خالق حقیقی سے جا ملے ۔ عمر مبارک کے 53 سال مکہ مکرمہ میں گذارے جن میں 40 سال اعلان نبوت سے پہلے کا زمانہ ہے اور تیرہ سال بعد از نبوت کا دور ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 04 2017

ہم نے کبھی بھی کراچی کے بعد لاہور، ملتان اور دیگر شہروں میں ’’بلاول ہاؤس‘‘ کی تعمیر کی حوصلہ افزائی نہیں کی ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ بلاول ہاؤس اربوں روپے سے تعمیر ہونے والا وہ پُرتعیش محل ہے جس میں پی پی کا ’’جیالا‘‘ بھی آسانی سے داخل نہیں ہو سکتا۔ ویسے بھی ہماری ملکی سیاست کے جتنے بھی بڑے نام ہیں ان کے گھروں میں عام کارکنوں کا داخلہ تو ویسے ہی شجرِ ممنوعہ ہوتا ہے۔ ایسے میں اگر بلاول بھٹو زرداری بغیر شادی کیے مسلسل بلاول ہاؤس بنا رہے ہیں تو اس سے یہ محسوس ہوتا ہے انہیں عوام کی خدمت سے کم دلچسپی ہے بلکہ وہ اپنے لئےگھر بنوانے میں زیادہ مصروف رہتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 29 2017

علیم ایک دوراندیش ، اور شاندار مشاہدے والا نوجوان ہے ۔ میرا کلاس فیلو ہونے کے ساتھ ساتھ دوست اور شوبز میدان کا دمکتا ستارہ ہے۔ ایک شام اس کے ساتھ کوہ قاف کے ایک دیس بہتانستان جانے کا پروگرام بنا ۔ ہم نے چند روز کی رخصت لی ، رخت سفر باندھا اور منزل پر پہنچ گئے ۔ وہاں جا کر دیکھا تو اس ملک میں جمہوریت آخری سانسیں لے رہی تھی ۔ وہاں ہم نے ایک ہوٹل میں قیام کیا ۔ مقامی لوگوں اور صحافیوں سے گفتگو کرنے کا موقع ملا ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 28 2017

جیری ڈگلس ایک سیماب صفت انسان تھا،ایک بے چین روح تھی ،ایک بے قرارشخص جو اچانک کبھی نمودارہوتا،ہم سے ملتا ہمارے ساتھ باتیں کرتا اور پھرجلد واپس آنے کا کہہ کر اچانک طویل عرصے کیلئے لاپتہ ہوجاتا۔ وہ ایک خوشبو تھی جس کی مہک ہماری روح کو سرشارکرتی تھی ۔وہ ایک راگ تھا جس کے زیروبم میں ہمارا جیون دھڑکتاتھا اور وہ ایک دھڑکن تھی جوہمیں زندگی کااحساس دلاتی تھی۔ ایک گلوکار جس کی آواز کانوں میں رس گھولتی تھی اور جوہمیں جیون کے گیت سناتا تھا ۔ موت ہم سے ہمیشہ زندگی چھینتی ہے لیکن موت کا سب سے کاری وار وہ ہو تا ہے جب وہ ہم سے زندگی کاگیت بھی چھین لے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 26 2017

گزشتہ ماہ کی بات ہے کہ مظفرگڑھ میں وزیرِ اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی آمد پر مسلم لیگ (ن) نے ایک بڑے جلسہ عام کا اہتمام کیا۔ مسلم لیگ (ن) نے مقامی انتظامیہ کے تعاون سے گیٹ توڑ رش کا انتظام کر لیا۔ مقامی مسلم لیگی قیادت اور اراکینِ اسمبلی کا جوش و خروش دیدنی تھا کہ سٹیج سیکرٹری نے سینئر سیاست دان اور رکن قومی اسمبلی ملک سلطان محمود ہنجرا کو خطاب کی دعوت دی۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 16 2017

پاکستان کی 70 سالہ تاریخ پر نظر ڈالیں تو معلوم ہوگا کہ ہم نے یہاں ہر پل محاصرے کی کیفیت میں گزارا۔ کبھی سوِل و ملٹری بیورو کریسی نے ہمیں محاصرے میں لیا، تو کبھی خود سیاستدان بھی محاصرہ کرنے والوں کے ساتھ شامل ہو گئے۔ کہیں جاگیر دار اور صنعت کار عوام کا محاصرہ کرتے دکھائی دیئے تو کبھی ایسا مرحلہ آیا کہ انصاف کے نام پر عدلیہ نے ہمارا محاصرہ کر لیا۔ آج کل ہم پھر محاصرے میں ہیں اور دہشت گردوں کو عسکریت پسندوں اور شدت پسندوں کے نام سے یاد کرتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 11 2017

آج 18 برس بعد بھی معاملات کم وبیش اسی نہج پر آ چکے ہیں۔ اسلام آباد اور راولپنڈی کے درمیان کشیدگی گزشتہ کئی روز سے ابھر کرسامنے آ چکی ہے۔ تنازع کی بنیادی وجوہات کم وبیش وہی دکھائی دے رہی ہیں جو 1999 میں تھیں۔ اُس وقت کارگل کا تنازعہ رفتہ رفتہ منتخب حکومت کے خاتمے پر منتج ہوا تھا۔ اب بھارت کے ساتھ کشیدگی کے ساتھ ساتھ دیگر معاملات ہی اختلاف کی بنیاد ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 07 2017

آئے روز دنیا کے کسی نہ کسی حصے سے انقلاب کی خبریں آتی رہتی ہیں جو کہ صحیح معنوں میں انقلاب نہیں ہوتا  بلکہ یہ محض فوجی بغاوت یا سیاسی نظام کی تبدیلی ہوتی ہے۔ اس طرح کی تبدیلی کو انقلاب کا نام دینا غلط ہے ۔ گزشتہ کچھ عرصے سے ہمارے ملک میں بھی انقلاب کا چرچا ہے اور عوام کو یہ” خوشخبری“ دی جا رہی ہے کہ انقلاب کا عمل اُس وقت تک جاری رہے گا جب تک یہ سارا نظام تبدیل نہیں ہو جاتا ۔ یعنی دوسرے لفظوں میں وہ یہ کہنا چاہ رہے ہیں کہ اس جمہوری حکومت کے خاتمے تک اس طرح کی محاذ آرائی جاری رہے گی۔

مزید پڑھیں

Donald Trump's policy towards Pakistan

Donald Trump's; the president of US war of tweets was a fierce attack on Pakistan, accusing the country of "lies and deceit" and making "fools" of US leaders. Trump decla

Read more

loading...