شہر شہر


  وقت اشاعت: 1 دن پہلے 

نوازشریف نے سندھ کے مسلسل دورے شروع کر دیئے ہیں۔ ان دوروں نے سیاست میں اک ہلچل سی مچا دی ہے۔ مسلم لیگ نون نے سندھ کو نظرانداز کر رکھا تھا۔ یہ ایک سوچی سمجھی پالیسی تھی۔ سوچ یہ تھی کہ سندھ میں پی پی کو نہ چھیڑا جائے۔ اپنی جیت کا تو کوئی فوری خدشہ ہے نہیں۔ سیاسی پوزیشن ہی خیر خیریت والی ہے۔ جب سادہ اکثریت لینا ہی ممکن نہیں تو پھر پی پی کو سندھ میں کھلا میدان دیا جائے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 21 مارچ 2017

آتی جاتی، پھر آتی پھر جاتی اور جیسے آتی ویسے ہی جاتی حکومتوں کی پیدا کردہ صورت حال اس صورت حال سے گہری مماثلت رکھتی ہے جو ہمارے ہاں اورنگزیب کی وفات سے لے کر برطانوی تسلط کے آغاز تک برقرار رہی تھی۔ پاکستان میں حکمرانی کے موجودہ بحران اور اس بحران کے خالق حکمران طبقہ کے فکر و احساس اور چال چلن کو سمجھنے کے لیے اس خوفناک مماثلت پر غور و فکر لازم ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 15 مارچ 2017

ابھی نادیہ ہاشمی کی کتاب "دا پرل دیٹ بروک ایٹس شیل"  ختم کی.  کچھ کتابیں ایسی ہوتی ہیں کہ اٹھا لیں تو  ختم کیے بغیرچھوڑنا مشکل ہو جاتا ہے.  کتاب کی دکھ بھری  کہانی دو لڑکیوں کے گرد گھومتی ہے جو افغانستان  میں  بچہ پوش بن کر زندگی سے لڑتی ہیں. یہ بچہ پوش کیا ہیں یہ سن کر شاید بہت سے لوگ حیران پریشان  رہ جائیں گے. جب میں نے پہلی بار اس رواج کے بارے میں پڑھا تو میرے لئے یقین کرنا مشکل تھا کہ یہ سچ ہے.

مزید پڑھیں

loading...

  وقت اشاعت: 12 مارچ 2017

میرے سامنے والے گھر میں ایک حاجی صاحب رہتے ہیں۔ پڑھے لکھے آدمیں ہیں۔ سول سیکرٹریٹ میں ملازمت کرتے ہیں۔ تقوی دار آدمی ہیں۔ مسجد جاتے ہیں۔ راستے میں ملنے والوں کو سلام کرتے ہیں۔ جب بھی ملتے ہیں خندہ پیشانی سے ملتے ہیں۔ ہمارے ہمسائیگی کے تعلقات بہت اچھے ہیں۔ مہینے میں ایک آدھ بار ان کے گھر سے کچھ پکا ہوا آجاتا ہے یا میرے گھر سے کچھ پکا ہوا چلا جاتا ہے۔ ہم دونوں نے محلے کے تین جنازوں میں ایک ساتھ شرکت کی ہے۔ جمعہ میں ملاقات ہوتی رہتی ہے۔ عید کو گلے ملتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 24 فروری 2017

گزشتہ دنوں سینئر کالم نگار اور صحافی  مجیب الرحمان شامی کا شہباز شریف کی طرزِ حکمرانی پر کالم پڑھا۔ جس میں انہوں نے ان کی برق رفتاری کے لقب شہباز شریف سپیڈ کے متعلق تفصیل بیان کی۔ چند روز قبل ہی پنجاب حکومت کی جانب سے اخبارات میں بڑی شدومد سے اشتہار دیا گیا جس میں امریکی تھنک ٹینک کا حوالہ دیتے ہوئے وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کو پاکستان کا نمبر ون وزیر اعلی قرار دیا گیا۔ لیکن انہی اخبارات میں ایک چھوٹی سی خبر شہباز شریف کی طرزِ حکمرانی کا پول کھول رہی تھی۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 12 فروری 2017

فیض احمد فیض نے جب سے قیام پاکستان کو اپنے ایمان کا جزو بنا کر برطانوی ہند کی فوج کو خیرباد کہا اور” پاکستان ٹائمز“ کی ادارت اختیار کی تب سے لے کر سن اکاون میںراولپنڈی سازش کیس میں اسیری تک وہ پاکستان کے تصور ، پاکستان کی تحریک اور پاکستان کے قیام کے بعد ہماری قومی تعمیرِ نو کے خواب و خیال کو اپنے قارئین کے دل و دماغ میں جاگزیں کرنے میں ہمہ تن منہمک رہے تھے-ہرچند اِس زمانے میں وہ کسانوں اور مزدوروں کی آزادی، خوشحالی اور سربلندی کی سیاسی تحریکوں میں بھی قائدانہ کردار اداکرتے رہے تاہم اِس مختصر تحریر کا بنیادی موضوع اُن کا صحافتی اور ثقافتی کردار ہے-

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 10 فروری 2017

سپریم کورٹ میں بیان کردہ تفصیلات کے مطابق وزارتِ صنعت کے مورخہ 4 دسمبر 2015کے نوٹیفکیشن میں شریف خاندان کی تین شوگر ملوں کو جنوبی پنجاب منتقلی کی اجازت دے دی گئی۔ یہ شوگر ملیں ننکانہ صاحب، سرگودھا اور اوکاڑہ میں واقع تھیں۔ جب حکمران ہی شوگر مل مالکان ہوں گے تو کیا حکومت کی جانب سے اس نوعیت کا اجازت نامہ سرکاری اور کاروباری مفادات کے ٹکراﺅ کے قانون کی خلاف ورزی نہیں۔ حیرت انگیز پہلو یہ ہے کہ مسابقتی کمیشن جیسے آئینی ادارے موجود ہونے کے باوجود  قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے شوگر مافیا کی جانب سے چینی کا ریٹ مقرر کئے جانے کے عمل کو غیر قانونی قرار نہیں دے رہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 05 فروری 2017

حکومتِ پنجاب کے احکامات کے تحت ڈی جی پبلک لائبریریز پنجاب نے پنجاب کی تمام سرکاری لائبریریوں اور تعلیمی اداروں کے لئے مصنف طارق احمد خان کی وزیر اعظم پاکستان پر لکھی جانے والی کتاب میاں محمد نواز شریف داستانِ حیات نامی کتاب کو خریدنے کے لئے احکامات جاری کر دیئے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 26 جنوری 2017

انیس جنوری کی بھیانک رات وہ کبھی فراموش نہیں کر سکے گی۔صرف چھ سال کی ننھی سی کلی تھی۔ ہوس کے پجاریوں نے پہلے ہوس کا نشانہ بنایا اور پھر گلے پر چھری پھیر کر کچرے کے ڈھیر پر پھینک دیا۔ میں یوٹیوب پر نصرت فتح علی خان کی قوالی سن رہا ہوں۔ حشر میں کون گواہی دے گا میری ساغر۔ سب تمہارے ہی طرف دار نظر آتے ہیں۔آنکھ اٹھی ۔۔ آنکھ اٹھی۔۔ آنکھ اٹھی محبت نے انگڑائی لی۔۔
عجیب سی بے کلی ہے ۔ جانے دل کیوں اداس ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 14 جنوری 2017

وسیم ایک چھلاوا تھا۔ ہم یار بیلی اسے ظالم ر نگ ساز کہتے تھے۔ ظالم اس کا تکیہ کلام تھا جو بالآخر دوستوں میں اس کا نام پڑ گیا ۔ کوئٹہ کی بولی میں ظالم ایک مفہوم میں بہت اچھا یا بہت خوبصورت کے لئے استعمال ہوتا ہے۔ وسیم کالج کے بعد مختلف گھروں وغیرہ میں رنگ و روغن کا کام کرتا تھا۔

مزید پڑھیں

Threat is from inside

Army Chief General Raheel Sharif assured the nation that country’s borders are secure and the army is aware of threats and intrigues of the enemies. Speaking at an even

Read more

loading...