شہر شہر


  وقت اشاعت: 29 2017

2008 میں برطانیہ کے ایک چھوٹے سے قصبے کی ایک بڑی سی جامعہ میں، ایک وفاقی وزیر تشریف لائے۔ ویسے تو ہمیں کبھی ان سے ملاقات کا شرف نصیب نہ ہوتا، چونکہ اس جامعہ میں پاکستانیوں کی تعداد خاصی کم تھی اس لئے ہمیں بھی شرف قبولیت بخشا گیا۔ باقی باتیں تو بھول گئیں، لیکن ایک بات یاد ہےکہ وفاقی وزیر نے بڑے درد ناک انداز میں فرمایا۔ "پاکستان کو اس حال میں پہنچانے میں ہم سب کا کردار ہے۔ آج پاکستان میں حالات بہت خراب ہیں لیکن میں ایک امید کی کرن دیکھ رہا ہوں۔ میں آپ لوگوں کو دیکھتا ہوں اور سمجھتا ہوں آپ پاکستان کو بہتری کی طرف لے جائیں گیں۔ دیکھیں ناں، حالات اس سے زیادہ تو خراب نہیں ہو سکتے نا؟ اب چیزیں بہتری کی طرف کی جائیں گی۔ انشا اللہ"۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 27 2017

علامہ اقبال نے ہوش سنبھالتے ہی مسلمان معاشروں کو جن بیماریوں میں مبتلا پایا اُن میں سے ایک مہلک بیماری کا نام مقدر پرستی ہے۔ انسان کی تقدیر کے بارے میں یہ تصور راسخ ہوچکا تھا کہ ہر شخص پیدائش کے وقت اپنا مقدر ساتھ لاتا ہے۔ یہ مقدر کسی صورت میں بھی تبدیل نہیں ہو سکتا۔ کوئی بھی انسانی جدوجہد انسان کے مقدر کو تبدیل نہیں کر سکتی۔ چنانچہ آدمی کو غربت سے لے کر غلامی تک ہرچیز کو تقدیر کا فیصلہ سمجھ کر چپکے چپکے برداشت کرتے رہنا چاہیے۔ اقبال مقدر پرستی کے اس تصور کو قرآنِ حکیم کی تعلیمات کے منافی قرار دیتے ہیں:
اسی قرآں میں ہے اب ترکِ جہاں کی تعلیم
جس نے مومن کو بنایا مہ و پرویں کا امیر
تن بہ تقدیر ہے آج ان کے عمل کا انداز
تھی نہاں جن کے ارادوں میں خُدا کی تقدیر

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 14 2017

دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جہاں ستر ہزار سے زائد پاکستانیوں نے اپنی قیمتی جانیں گنوائیں  وہیں اس جنگ کے نتیجے میں متعدد سیاہ ترین واقعات بھی ہماری یاداشتوں کا حصہ بنے جو ہرگز کسی ڈراؤنے خواب سے کم نہیں۔ مگران سب سیاہ ترین واقعات میں جو امتیازی مقام جولائی 2007 کے سانحے کو حاصل ہے اس کی نظیر دیگر اقوام کی تاریخ میں شاید ڈھونڈنے سے بھی نہ ملے۔ کیونکہ تبھی عالمی میڈیا میں پاکستان کو ایک دہشت گرد ریاست کے طور پر متعارف کروانے کے اُس تشویشناک سلسلے کا باقاعدہ آغاز ہوا جس کی جھلک ہم آئے دن بین الاقوامی فورمز پر مشاہدہ کرتے رہتے ہیں۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 11 2017

فنونِ لطیفہ میں ہنگامی اور آفاقی ، وقتی اور دوامی کے پُر اسرار تخلیقی رشتوں کا سُراغ پانے کے لیے اقبال کی نظم ’’ذوق و شوق‘‘ کا مطالعہ کلیدی اہمیت کا حامل ہے۔ نظم کا پہلا مصرع ہی اس بات کا اعلان ہے کہ اس نظم کا موضوع ’’قلب و نظر کی زندگی ہے‘‘۔ ہر چند آفاقی جذبات اور دائمی حقائق کسی مقامی اور وقتی حوالے سے بے نیازہوا کرتے ہیں تاہم انہیں اپنے زمانی و مکانی تناظر میں سمجھنے کی ایک اپنی الگ اہمیت ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 09 2017

اقبال کی طویل نظم ’’لینن خُدا کے حضور میں‘‘ بڑی حد تک اقبال کی ممنوعہ شاعری میں شمار ہوتی ہے۔ یہ نظم قارئین ادب میں جتنی مقبول ہے نقادانِ ادب میں اتنی ہی غیر مقبول ہے۔ اس وقت تک اقبال کی طویل نظموں کی تفہیم و تحسین پر مشتمل دو قابلِ قدر کتابیں شائع ہو چکی ہیں۔ ایک بھارت میں اور دوسری پاکستان میں۔ نامور نقاد پروفیسر اسلوب احمد انصاری کی کتاب ’’اقبال کی تیرہ نظمیں‘‘ اقبال شناسی میں ایک عمدہ اضافہ ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 04 2017

بھارت میں بڑھتی ہوئی انتہا پسندی کی کہانی کسی سے بھی ڈھکی چھپی نہیں مگر اب تو اس انتہا پسندی(سیفرانائزیشن) کے بیج بھارتی اسکولوں میں پڑھائے جانے والے نصاب میں بھی نشونما پانے لگے ہیں۔ جس کا ثبوت کیرالا(ساؤتھ انڈیا) میں سنگھ پریوار کے کلیدی لیڈران کو محض خراج تحسین پیش کرنے کے لئے متعارف کرایا جانے والا نصاب ہے ۔ یہ نصاب ہندوتوا نظریے کی بانی تنظیم آرایس ایس (راشٹریہ سویم سیوک سنگھ) کے تعلیمی ونگ نے متعارف کروایا ہے اور اس میں متعدد تاریخی حقائق کو مسخ کرکے پیش کیا گیا ہے ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 02 2017

سوات جسے پاکستان کا سویٹزر لینڈ بھی کہا جاتا ہے سرسبز وشاداب میدانوں، خوبصورت مرغزاروں اور شفاف پانی کے چشموں سے مالا مال ہے۔ دنیا کے حسین ترین خطوں میں شمار یہ علاقہ، پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد سے شمال مشرق کی جانب 254 کلو میٹر کے فاصلے پر واقع ہے جب کہ صوبائی دارلحکومت پشاور سے اس کا فاصلہ 170 کلو میٹرہے۔ مگرسنہ 2007 سے 2009 کے درمیان دہشت گرد تنظیم ٹی این ایس ایم (تحریکِ نفاذِ شریعتِ محمدی) کے بانی صوفی محمد اور اس کے داماد ملا فضل اللہ کے زیر قیادت طالبان نے سوات میں نظام عدل اور نفاذ شریعت کی آڑ میں ایسا گھناؤنا کھیل رچایا کہ اس پوری وادی کا نقشہ ہی بدل ڈالا۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 31 2017

جنرل ضیاء الحق کے دور میں پراپرٹی بزنس کو فروغ ہوا۔ جب کسی ملک کی آبادی بڑھ جاتی ہے تو یقیناً اس کی رہائشی ضروریات میں بھی اضافہ ہوتا ہے۔ حکومت کا کام ہے کہ درمیانے طبقے اور سرکاری ملازمین کے لئے کم لاگت والے فلیٹ اور مکانات تعمیر کرکے قسطوں پر فروخت کرے۔ اس کام میں نجی شعبہ کے بینکوں کو بھی شریک کیا جاتا ہے۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 27 2017

یونی ورسٹی میں مطالعہ میں مصروف تھا کہ عظمت ملک نے معروف صحافی احمد نورانی پر حملہ کی اطلاع دی۔ معروف صحافی انصار عباسی نے بھی بذریعہ ٹوئیٹر تصدیق کی ۔ احمد نورانی مشہور و معروف صحافی رحمت علی رازی کے بھتیجے ہیں۔ بہاولپور سے تعلق رکھتے ہیں اور بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی سے فارغ التحصیل ہیں ۔

مزید پڑھیں

  وقت اشاعت: 23 2017

تاریخِ اسلام میں جب سے خاندانی بادشاہت نے رواج پایا ہے تب سے سلاطین و ملوک مسلمانوں کو باہم متحارب فرقوں میں تقسیم در تقسیم کرتے چلے آ رہے ہیں- اِس حکمتِ فرعونی کی تازہ ترین مثال دُنیائے اسلام میں شیعہ سُنّی جنگ و جدل ہے- ابھی کل ہی کی بات ہے کہ افغانستان میں دو مساجد پر بیک وقت دہشت گرد حملہ آور ہوئے اور یوں عبادت میں مصروف ساٹھ مسلمان شہید کر دیئے گئے۔ زخمیوں کی تعداد ایک سو سے اوپر ہے۔ اِن میں سے ایک مسجد اہلِ سنت والجماعت کی ہے اور ایک اہلِ تشیع کی۔

مزید پڑھیں

Growing dangers of Islamist radicalism on Pakistani politics

Mr Arshad Butt is an insightful observer of the political events in Pakistan. Even though the hallmark of Pakistani political developments and shabby deals defy any commo

Read more

loading...