بطیحا

  • محرابِ مسجد میں خرّاٹے

    ہر صبح موبائل کبوتر غُٹر غُوں گا کر صبح کے چھ بجنے کا اعلان کرتا ہے کہ شبینہ موت کا وقت ختم ہوا ۔ چلو لباسِ شب خوابی اُتارو ، لباسِ بیداری زیبِ تن کرو اور نفاست سے وضو بنا کر رب کے حضور حاضری دو لیکن آج نہ جانے کیا ہوا کہ کبوتر نے غُٹر غوں کے بجائے عیسیٰ خیلوی لہجے میں ایک رزمیہ پ [..]مزید پڑھیں

  • یومِ خواتین زندہ باد

    بین الاقوامی طور پر 8 مارچ کو خواتین کا عالمی دن قرار دیا گیا ہے ۔ ہر چند کہ بعض کٹّڑ مذہبی حلقوں کی طرف سے اِس دن کے خلاف آوازیں اُٹھتی ہیں اور اِسے خلافِ شریعت قرار دیا جاتا ہے لیکن یہ ایک ایسا اعتراض جو کئی حوالوں سے بے محل اور غیر ضروری ہے کیونکہ آج سے پندرہ صدیاں پہلے عرب قب [..]مزید پڑھیں

  • نیم تاریکی میں تبلیغی ایڈونچر

    مسلمان اللہ کا سپاہی ہے اور ہمیشہ اپنے اپنے بریگیڈ کی وردی میں رہتا ہے ۔ اس وردی میں مُٹھی بھر داڑھی ، مُنڈی مونچھیں ، لمبا کُرتا ، ٹخنوں سے اونچی شلوار اور گلے سے ح اور ع کی آوازیں نکالنے کی صلاحیت شامل ہے ۔ چنانچہ جیسا دیس ویسا بھیس مکتبِ فکر کے لوگ اُن کی لُغت میں لبڑل کہلاتے [..]مزید پڑھیں

loading...
  • اَذیّت ناک سوالات

    کیا پاکستانی کوئی قوم ہیں ؟ یا یہ مُختلف قومیتوں ، مہاجروں اور بھانت بھانت کے غیرقانونی تارکینِ وطن پر مشتمل بڑی طاقتوں کی جمع کی ہوئی بھیڑ ہے جسے مختلف نظریات کا زہر دے کر فرقہ واریت اور دہشت گردی کی موت ماردیا گیا ہے ۔ کیا یہ وہ جگہ ہے جہاں مرکھنے بیل لڑتے ہیں ، جن کے پاؤ [..]مزید پڑھیں

  • جمہوریت کا تھیٹر

    تیسری دنیا ایک کشکول ہے جس میں جمہور کے نام پر بھیک مانگی جاتی ہے اور بھیک کا یہ اندوختہ سیاسی اشرافیہ کی وہ جمع پونجی ہوتی ہے جس پر وہ اپنی سرمایہ داری کی جعلی عمارت تعمیر کرتے ہیں اور اس عمارت کو کھڑا رکھنے کے لیے وہ بین الاقوامی مالیاتی اداروں کے آگے جمہور کو گروی رکھ کر اپنی [..]مزید پڑھیں

  • اقتدار کے بیمار

    اور اب ایک نیا نعرہ ۔ مدینے کی ریاست ۔ لیکن پاکستان کا مطلب لالہ الاللہ کے نعرے اور مدینے کی ریاست کے نعرے میں فرق کیا ہے ۔ دونوں نعرے ہیں ۔ دونوں کے لگانے والے پاکستان کے وہ سیاستدان ہیں جو پچھلے ستر برس سے جمہوریت کی لکیر پیٹتے آ رہے ہیں لیکن جمہوریت کہیں دکھائی نہیں دی ۔وہ جمہ [..]مزید پڑھیں

  • قانون کا خون

    پاکستان ایک عجیب بستی ہے جہاں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے بیشتر اہل کار اکھڑ ، بد مزاج ، دشنام طراز اور بالعموم غیر مہذب رویوں کے حامل ہوتے ہیں ۔ اُن کے عوام سے اندازِ تخاطب میں انتہا کی فرعونیت ہوتی ہے اور اُن کی نظریں قانون کے نفاذ پر نہیں قانون کی بھینس کے دودھ پر ہوتی ہیں [..]مزید پڑھیں

  • غیر اِسلام یافتہ مسلمانوں کا المیہ

    اِس وقت سمندر پار پاکستانیوں کی نظر ساہیوال میں ہونے والے اُس واقعے پر لگی ہے جس میں کم سن بچوں کے سامنے اُن کے والدین کو پاکستان کے قانون نافذ کرنے والے اور انسدادِ دہشت گردی کے اداروں نے نہ جانے کن وجوہات کی بنا ہر صفحہ ء ہستی سے حرفِ غلط کی طرح مٹادیا تھا ۔ مگر اب اُس کی صفائی [..]مزید پڑھیں

  • خَس کم ، جہاں پاک

    قاضی القضاۃ ، عادلِ اکبر میاں ثاقب نثار بالآخر ریٹائر منٹ کی دیوی پر نثار ہو گئے اور ایک زمانے نے سُکھ کا سانس لیا ۔ بات خُدالگتی سہی مگر اس موقع پر ہر قسم کے ردِ عمل کا امکان رہتا ہے ۔ چنانچہ دوستوں کے ساتھ ساتھ کچھ اختلافی رائے رکھنے والوں نے اپنے تبّرے بھی رقم کیے ۔ ایک شخص نے [..]مزید پڑھیں

  • لفظ کی بے حُرمتی

    لفظ خُدا کی ایجاد ہے اور اُس کو زبان و لب سے ادا کرنا عبادت لیکن بدقسمتی سے ہمارے تمام سماجی شعبوں میں لفظ کی بے حُرمتی کی جا رہی ہے اور کلماتِ پاکیزہ کو کلماتِ خبیثہ سے بدلا جا رہا ہے ۔ خُدا نے البقرہ میں بتایا ہے کہ اُس نے آدم کو اسماء سکھائے ، سارے ناؤنز یاد کرائے اور سورہ ء ا ل [..]مزید پڑھیں