پیرس میں صحافیوں پر 18 سالہ پاکستانی کا چاقو سے حملہ، دو افراد زخمی

  • ہفتہ 26 / ستمبر / 2020
  • 2360

فرانس کے طنزیہ میگزین چارلی ایبڈو کے پُرانے دفتر کے قریب صحافیوں پر چاقو سے حملہ کرنے کے الزام میں سات افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے ا۔ اس واقعے میں دو افراد زخمی ہوئے ہیں۔ فرانس کے وزیر داخلہ نے اسے دہشت گرد حملہ قرار دیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق پاکستان سے تعلق رکھنے والے ایک 18 سالہ شخص کو مرکزی ملزم قرار دیا جا رہا ہے۔ اسے جائے وقوعہ کے قریب گرفتار کیا گیا ہے۔  پولیس کا کہنا ہے کہ مرکزی ملزم کے علاوہ مزید چھ افراد کو حراست میں لیا گیا ہے اور ان سے تفتیش جاری ہے۔

اس سانحہ کے دو زخمیوں میں ایک مرد اور ایک خاتون شامل ہیں جو ایک ٹی وی نیوز پروڈکشن کمپنی کے لیے کام کرتے ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ انہیں ایک بڑے چاقو جیسے ہتھیار کے ذریعے شدید زخمی کیا گیا۔  فرانس کے وزیر اعظم نے جائے وقوعہ پر صحافیوں کو بتایا کہ زخمی ہونے والے افراد کی زندگیاں خطرے سے باہر ہیں۔

فرانس میں یہ حملہ ایسے وقت میں ہوا ہے کہ جب 2015 میں چارلی ایبڈو کے دفتر پر حملے دو جہادیوں کی سہولت کاری کے الزام میں 14 افراد پر مقدمہ چل رہا ہے۔ اس واقعے میں 12 افراد ہلاک ہوئے تھے۔  اس حملہ کے بعد سے اب چارلی ایبڈو کے دفتر کو ایک خفیہ مقام پر منتقل کر دیا گیا ہے۔

فرانس ٹو نامی چینل پر انٹرویو میں وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ یہ ہمارے ملک اور اس کے صحافیوں کے خلاف ایک خونی حملہ ہے۔ یہ وہ سڑک ہے جہاں چارلی ایبڈو ہوا کرتا تھا۔ اسلامی دہشت گرد ایسے ہی کام کرتے ہیں۔ فرانس میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ تمام یہودی عبادت گاہوں پر سکیورٹی سخت کردیں۔

مرکزی ملزم کا نام ظاہر نہیں کیا گیا لیکن وزیر داخلہ نے کہا ہے کہ وہ پاکستان سے تین سال قبل ’ایک تنہا لڑکے کے طور پر‘ فرانس آیا تھا۔  اس حوالے سے کوئی معلومات نہیں کہ ملزم کو شدت پسندی کی طرف کیسے لے جایا گیا۔

زخمی ہونے والے افراد کے ساتھی بتاتے ہیں کہ  جب حملہ ہؤا تو وہ دفتر کے باہر سگریٹ نوشی کر رہے تھے۔ نیوز چینل کا دفتر اسی سڑک پر ہے جہاں چارلی ایبڈو کا پرانا دفتر ہوا کرتا تھا۔ اسی علاقے میں 2015 کے واقعے میں ہلاک ہونے والے افراد کی تصاویر بھی موجود ہیں۔

ان کے ایک ساتھی نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ ’میں کھڑکی سے دیکھ رہا تھا کہ میرے ایک ساتھی کا خون نکل رہا ہے اور ایک ایسا شخص اس کا پیچھا کر رہا ہے جس کے ہاتھ میں چاقو ہے۔ نیوز چینل کے بانی پال موریرا نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ ان دونوں کو بُری طرح زخمی کیا گیا۔ پولیس نے جلد اس علاقے کو سیل کردیا اور قریب سے ایک چاقو برآمد کیا۔

اس حملہ کے سلسلہ میں پیرس کے شمال مشرقی مضافات سے پاکستان نژاد پانچ مزید افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔  فرانسیسی ذرائع ابلاغ کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ یہ گرفتاریاں مرکزی ملزم کے گھر تلاشی کے دوران عمل میں آئیں۔

loading...