ملک بھر میں سادگی اور احتیاط کے ساتھ عیدالفطر منائی گئی

  • سوموار 25 / مئ / 2020
  • 1400

پاکستان بھر میں عیدالفطر مذہبی جوش و جذبے کے ساتھ ساتھ احتیاط اور سادگی کے ساتھ منائی گئی۔ لیکن متعدد مواقع پر قواعد اور سماجی دوری کی خلاف ورزیاں بھی دیکھنے میں آئیں۔

بعض مقامات پر کورونا وائرس کی وجہ سے عوام نے احتیاطی تدابیر سے کام لیتے ہوئے ماسک پہن کر اور سماجی فاصلہ برقرار رکھتے ہوئے نماز عید ادا کی۔ عید سے پہلے پی آئی اے طیارے کے حادثے اور وائرس سے متاثرہ افراد و خاندانوں سے یکجہتی کے لیے اس سال سادگی سے منائی جا رہی ہے۔

اس سال عید کی سب سے منفرد بات یہ ہے کہ پورے ملک میں کافی سالوں بعد ایک ساتھ عید منائی گئی۔

وزیرِ اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ عید کے موقع پر ایس او پیز پر عملدرآمد ہوتے نظر نہیں آیا۔ اس لیے عید کے فوراً بعد حکومت اس صورتحال کا از سرِ نو جائزہ لے گی اور اگر ہمیں ایس او پیز پر عمل ہوتے نظر نہ آیا تو لاک ڈاؤن کے فیصلے پر نظرثانی کرنی پڑے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستانی شاید سمجھ رہے ہیں کہ کورونا وائرس صرف عید تک تھا۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ اگر ہم نےغیر ذمہ داری کا مظاہرہ کیا توبیماری پھیلے گی اورلاک ڈاؤن کے فیصلے پر نظرثانی کرنا پڑے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر ہم نےاحتیاطی تدابیراختیار نہ کیں توبہت بڑا بحران پیدا ہوسکتا ہے اور آنے والے دنوں میں اموات میں اضافہ ہو سکتا ہے۔ اس لیے عوام سےکہتا ہوں بیماری کو روکنےکا سبب بنیں، پھیلانےکا باعث  نہ بنیں۔

loading...