کورونا متاثرین کی تعداد پندرہ لاکھ تک پہنچ گئی

  • بدھ 08 / اپریل / 2020
  • 690

دنیا بھر میں کورونا وائرس کے مصدقہ متاثرین کی تعداد 15 لاکھ تک ہنچنے والی ہے جبکہ اموات کی تعداد 83 ہزار سے زیادہ ہو گئی ہے۔  پاکستان میں اب تک 4 ہزار 194 افراد کورونا سے متاثر ہوئے ہیں جبکہ 60 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے دوسری رات انتہائی نگہداشت یونٹ میں گزاری جہاں ان کی حالت مستحکم بتائی گئی ہے۔ چین کے شہر ووہان میں 11 ہفتوں سے جاری لاک ڈاؤن ختم ہونے کے بعد لوگ بڑی تعداد میں گھروں سے باہر نکل آئے ہیں۔ جانز ہاپکنز یونیورسٹی کے مطابق امریکہ میں کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کی تعداد 12 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے۔ فرانس میں بھی وبا کے آغاز کے بعد سے ہلاکتیں 10 ہزار تک پہنچ گئی ہیں جہاں گزشتہ 24 گھنٹوں میں 607 افراد ہلاک ہوئے۔

عالمی ادارہ صحت کے مطابق شمالی کوریا میں ابھی تک صرف 709 افراد کا کورونا وائرس ٹیسٹ کیا گیا ہے۔ شمالی کوریا ان ممالک میں سے ہے جو یہ دعویٰ کرتے ہیں کہ ان کی سرزمین پر اب تک کوئی بھی کورونا وائرس سے متاثر نہیں ہوا۔ عالمی ادارہ صحت کے نمائندہ برائے شمالی کوریا ڈاکٹر ایڈون سالواڈور نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ جن افراد کے ٹیسٹ کیے گئے ہیں ان میں 11 غیر ملکی اور 698 مقامی افراد شامل ہیں۔ شمالی کوریا کی کل آبادی ڈھائی کروڑ کے قریب ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ ملک میں بہت کم افراد کے ٹیسٹ کیے گئے ہیں۔ شمالی کوریا کے ہمسایہ ملک جنوبی کوریا کی پانچ کروڑ دس لاکھ کی آبادی میں سے چار لاکھ 86 ہزار کے ٹیسٹ کیے جا چکے ہیں۔ شمالی کوریا میں ایک تجزیہ نگار نے بی بی سی کو بتایا کہ ایسا بہت مشکل ہے کہ جس ملک کی سرحدیں چین اور جنوبی کوریا سے ملتی ہوں وہاں کوئی بھی کیس سامنے نہ آئے۔

انڈیا کے زیر انتظام کشمیر کے درالحکومت سری نگر میں حکام نے کورونا کی وبا کے پیش نظر مسلمانوں کے مذہبی تہور شبِ برات کے سلسلے ہونے والی تقریبات اور اجتماعات پر پابندی عائد کر دی ہے۔ اس مذہبی تہوار کے دوران عمومی طور پر مسلمان آبادی اپنے پیاروں کی قبروں پر جا کر فاتحہ خوانی کرتی ہے اور ان کی مغفرت کے لیے دعائیں کی جاتیں ہیں۔ لیکن اس مرتبہ کورونا وائرس کے پیش نظر کیے جانے والے حکومت اقدامات کے تحت خطے میں لاک ڈاؤن ہے۔ انڈیا میں گزشتہ چند روز میں کورونا کے متاثرین کی تعداد میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے اور ملک میں 5000 سے زائد افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص جبکہ 150 کے قریب ہلاکتوں کی تصدیق ہوئی ہے۔

پاکستان میں بھی یہ وائرس اب تک 4 ہزار 194 افراد کو متاثر کرچکا ہے جبکہ 60 افراد وفات پاچکے ہیں۔ ملک میں رواں ماہ کے آغاز سے کورونا وائرس کے کیسز میں دوگنا اضافہ دیکھا گیا ہے۔ 8 اپریل کو بھی پاکستان میں کورونا وائرس کے کیسز آنے کا سلسلہ جاری رہا اور چاروں صوبوں سے نئے کیسز کی تصدیق ہوگئی۔

ترکی ان ملکوں میں شامل ہے جہاں کورونا وائرس سے متاثر ہونے والوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے اور اس کا سب سے بڑا شہر استنبول اس کا وبائی مرکز بنا ہوا ہے اور اس وبا کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے مکمل لاک ڈاؤن کے مطالبات بڑھتے جا رہے ہیں۔ ترکی کے بعض تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ ملک کے سب سے بڑے شہر اور تجارتی مرکز استنبول کو مکمل طور سےبند کرنا بہت بھاری قیمت ہو گی جو ترکی کو ادا کرنی پڑے گی۔

loading...