ٹرمپ کی دھمکی کے بعد بھارت نے اینٹی ملیریا ادویات کی برآمد پر پابندی اٹھا لی

  • منگل 07 / اپریل / 2020
  • 720

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی دھمکی کے بعد بھارت نے کلوروکوین دوا کی برآمد پر سے پابندی ہٹا لی ہے اور اسے امریکہ کے علاوہ دیگر ملکوں کو برآمد کرنے کا عندیہ دیا ہے۔

صدر ٹرمپ ے گزشتہ روز پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر بھارت نے ایسی کوئی دوا امریکہ کو روانہ نہ کی جس کی اسے اس وقت ضرورت ہے تو  امریکہ بھی بھارت کے خلاف انتقامی کارروائی کرے گا۔ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ بھارت پہلے ہی تجارتی عدم توازن کی وجہ سے امریکہ سے بہت منافع کما رہا ہے۔ اس بیان کے تھوڑی دیر بعد ہی بھارتی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کلرو کوین اور پیرا سیٹا مول پر سے پابندی اٹھانے کا اعلان کیا تھا۔

نئی دیلی میں وزارت خارجہ کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ایسی 14 دواؤں  کی برآمد پر پابندی اٹھائی جارہی ہے جو کورونا وائرس کے علاج میں مفید ہوسکتی ہیں۔ یہ دوائیں ہمسایہ ملکوں کے علاوہ ان ملکوں کو بھی فراہم کی جائیں گی جو اس وقت کورونو وائرس کے شدید حملے کا سامنا کررہے ہیں۔

گزشتہ ہفتے کے دوران بھارتی حکومت نے یہ معلومات سامنے آنے کے بعد کہ کلورو کوین کورونا وائرس کے علاج میں مفید ہوسکتی ہے، اس دوا کی برآمد پر پابندی لگادی تھی۔ اس فیصلہ پر امریکی صدر نے سخت احتجاج کیا تھا۔ امریکہ میں اس وقت کورونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے اور صدر ٹرمپ کا خیال ہے کہ ملیریا کی دوا اس کے علاج میں تیر بہدف ثابت ہوسکتی ہے۔

متعدد ماہرین صدر ٹرمپ کے اس دعویٰ سے اختلاف کرتے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ اس دوا سے کورونا کے علاج کی امید باندھنا درست نہیں ہے کیوں کہ ابھی اس حوالے سے کوئی تحقیق سامنے نہیں آئی۔ اس دوران امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے انکشاف کیا ہے کہ صدر ٹرمپ کی طرف سے ملیریا کی دوا کو کورونا کے علاج کے لئے اہم قرار دینے کی ایک وجہ یہ بھی ہوسکتی ہے کیوں کہ وہ خود ایک ایسے دوا ساز کمپنی کے شئیر ہولڈر ہیں جو یہ دوا بناتی ہے۔ یا ان کے طاقت ور دوست ایسی کمپنیوں کے مالک ہیں۔

loading...