اقوام متحدہ میں پاکستانی مندوب ملیحہ لودھی کو ہٹا دیا گیا

  • منگل 01 / اکتوبر / 2019
  • 500

وزیر اعظم عمران خان کے دورہ امریکہ کے فوراً بعد ہی اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی کو ہٹا کر ان کی جگہ منیر اکرم کو تعینات کر دیا گیا ہے۔

منیر اکرم سابق صدر پرویز مشرف کے دور میں بھی  2002 سے 2008 تک اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقبل مندوب کی حیثیت سے  فرائض سرانجام دے چکے ہیں۔ 2008 میں پیپلز پارٹی کی حکومت کی جانب سے بینظیر بھٹو کے قتل کی تحقیقات اقوام متحدہ سے کروانے کے معاملے پر منیر اکرم کے پیپلز پارٹی سے اختلافات پیدا ہو گئے تھے جس کے بعد انہیں عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا۔

منیر اکرم پر نیویارک میں  2002 میں اپنی ساتھی خاتون پر گھریلو تشدد کا الزام بھی عائد کیا گیا تھا تاہم سفارتی استثنیٰ کی بنیاد پر ان کے خلاف کارروائی نہیں کی گئی تھی۔

ملیحہ لودھی نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں لکھا ہے کہ دنیا کے سب سے بڑے فورم پر پاکستان کی نمائندگی کرنا ان کے لیے اعزاز کی بات ہے۔ انہوں نے لکھا کہ وزیر اعظم کے دورے اور گزشتہ کئی برسوں سے ملنے والی پذیرائی پر وہ شکر گزار ہیں۔

ملیحہ لودھی کو دسمبر 2014 میں اقوام متحدہ میں مستقل مندوب تعینات کیا گیا تھا اور انہوں نے فروری 2015 میں اپنی ذمہ داریاں سنبھال لی تھیں۔  ملیحہ لودھی  1994 سے 1997 اور پھر  1999 سے 2002 تک دو بار امریکا میں پاکستان کی سفیر بھی رہ چکی ہیں۔

ملیحہ لودھی کی تبدیلی کا فیصلہ ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے دورہ امریکہ کے بعد حکومتی حلقوں میں ملیحہ لودھی کی تعریف میں قصیدے پڑھے جا رہے تھے۔

وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے تو اپنی ٹویٹ میں عمران خان کے اس دورے کی ’کامیابی‘ کا سہرا بھی ملیحہ لودھی کے سر باندھا تھا۔

loading...