ہر سطح پر مسئلہ کشمیر اجاگر کیا جائے گا: عمران خان

  • بدھ 14 / اگست / 2019
  • 280

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اب میں دنیا میں آزاد جموں و کشمیر کا سفیر بنوں گا۔ انہوں نے یہ بات آزاد جموں و کشمیر کی قانون ساز اسمبلی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے بہت بڑی اسٹریٹیجک غلطی کی ہے جو اسے بہت مہنگی پڑے گی۔  ہمارے سامنے اس وقت آر ایس ایس کی شکل میں ایک خطرناک نظریہ کھڑا ہے جو ہٹلر کی نازی پارٹی سے متاثر ہے۔ میں نے پہلی مرتبہ دنیا کے سامنے بھارتی وزیراعظم کا مکروہ اور اصل چہرہ سامنے رکھا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ’آر ایس ایس نظریہ سمجھتا ہے کہ مسلمانوں نے ان پر سیکٹروں سالوں تک حکومت کی ہے اب ان سے بدلہ لینے کا وقت آگیا ہے کیونکہ اگر یہ ہم پر حکومت نہ کرتے تو ہم عظیم قوم ہوتے۔‘ یہ نظریہ گزشتہ کئی سالوں سے موجود ہے۔ اسی لئے بابری مسجد کا واقعہ پیش آیا۔  تاہم پچھلے 5 سالوں کے دوران مقبوضہ کشمیر میں اس نظریے کو تقویت بخشی گئی۔

وزیراعظم نے کہا کہ مودی نے اسی نظریہ کا استعمال کرتے ہوئے آخری کارڈ کھیل لیا ہے اور میں سمجھتا ہوں کہ یہ اس نے تاریخی اسٹریٹیجک غلطی کردی ہے جس کا خمیازہ اسے بھگتنا پڑے گا۔  مودی نے کشمیر کو انٹرنیشنلائزڈ کردیا ہے۔ اب میں کشمیر کا معاملہ پوری دنیا میں پہنچاؤں گا اور کشمیر کا سفیر بنوں گا۔  عمران خان نے کہا کہ آر ایس ایس کا جن بوتل سے نکل آیا ہے۔ اب یہ معاملہ سکھوں، عیسائیوں اور دلت تک جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ اب فاروق عبداللہ اور محبوبہ مفتی جیسے رہنما کہہ رہے ہیں کہ قائداعظم محمد علی جناح کا نظریہ بالکل درست تھا اور بھارت کے ساتھ جاکر بہت بڑی غلطی کی۔ پاکستانی وزیراعظم عمران خان نے بھارتی وزیراعظم کو پیغام دیا کہ پاکستانی قوم اور فوج تیار ہے آپ جو کریں گے ہم آپ کا مقابلہ کریں گے اور آخر تک جائیں گے اور بھارت کی اینٹ کا جواب پتھر سے دیں گے۔

عمران خان نے کہا کہ ہمیں لآ اِلٰہَ اِلَّا اللہُ کی طاقت حاصل ہے۔ ہم اللہ کے سوا کسی سے نہیں ڈرتے۔  اب جو جنگ ہوگی اس کی ذمہ داری بین الاقوامی برادری پر ہوگی کیونکہ جنگیں روکنا ان کا کام تھا جو انہوں نے نہیں کیا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ پاکستان مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے کے لیے دنیا کے ہر فورم پر جائیں گے اور اقوام متحدہ کے آئندہ اجلاس کے دوران دنیا دیکھے گی کہ کتنے لوگ کشمیر کے لیے باہر نکلیں گے اور احتجاج کریں گے۔ مودی کی جانب سے اپنا آخری کارڈ کھیلنے کے بعد اب کشمیر آزادی کی جانب جائے گا۔ اب صرف اور کشمیری یا پاکستانی ہی نہیں بلکہ دنیا کے ایک ارب 50 کروڑ مسلمان اقوام متحدہ کی جانب دیکھ رہے ہیں۔

خطاب کے آخر میں انہوں نے بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کو خراج عقیدت پیش کیا اور ان کی دور اندیش سیاست پر ان کی تعریف کی۔

اسپیکر آزاد جموں و کشمیر نے اجلاس کے آغاز میں وزیر اعظم عمران خان کی مظفرآباد آمد پر ان کا شکریہ ادا کیا۔  وزیراعظم آزاد جموں و کشمیر راجا فاروق حیدر فاروق نے کہا ہے کہ کشمیری عوام پاکستان کے بقا کی جنگ لڑ رہے ہیں۔

وزیراعظم آزاد کشمیر نے بتایا کہ تقسیم ہند کے دوران بھی لاکھوں کشمیر مارے گئے تھے، ان پر ہونے والے ظلم کے بعد انہوں نے 1947، 1965، 1971 اور 1989 کے بعد سے اب تک 40 ہزار سے زائد کشمیری مہاجرین یہاں کیمپوں پر مقیم ہیں۔

راجا حیدر فاروق نے کہا کہ کشمیری عوام پاکستان کی جانب دیکھ رہے ہیں اور امید رکھتے ہیں کہ پاکستان ہماری پشت پر کھڑا ہوگا اور ہم آگے کھڑے ہوں گے۔  انہوں نے کہا کہ میں اپنی زندگی میں مقبوضہ کشمیر میں اپنے آبائی علاقے کو دیکھنا چاہتا ہوں، ہزاروں کشمیر ایل او سی کو عبور کرنے کے لیے تیار ہیں۔

 

loading...