انگلینڈ کی ٹیم 27 سال بعد ورلڈ کپ کے فائینل میں پہنچ گئی

  • جمعرات 11 / جولائی / 2019
  • 320

انگلینڈ نے دوسرے سیمی فائینل میں اس وقت کے چیمپئین آسٹریلیا کو شکست دے کر فائینل کھیلنے کے لئے کوالی فائی کرلیا ہے۔ اس طرح انگلینڈ  27سال بعد  اتوار کو ورلڈ کپ فائنل کھیلے گی۔

برمنگھم میں کھیلے گئے پہلے سیمی فائنل میچ میں میزبان آسٹریلیا کے کپتان ایرون فنچ نے پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا جو درست ثابت نہ ہوسکا۔  انگلینڈ کے باؤلرز نے تباہ کن باؤلنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 14 کے اسکور پر ہی ایرون فنچ، ڈیوڈ وارنر اور پیٹر ہینڈزکومب کو آؤٹ کردیا۔ اس کے بعد اسٹیو اسمتھ اور ایلکس کیری نے ٹیم کو سنچری پارٹنر شپ فراہم کی اور ٹیم کو بحران سے نکالا۔

انگلش ٹیم نے ایلکس کیری کو 117 جبکہ 118 کے اسکور پر مارکس اسٹوائنس کو آؤٹ کرکے دوبارہ میچ میں واپس کی۔  گلین میکس ویل نے 23 گیندوں پر 22 رنز کی اننگز کھیلی لیکن وہ اسکور کو زیادہ آگے لے جانے میں ناکام رہے اور جوفرا آرچر کی گیند پر آؤٹ ہوگئے۔ اسمتھ کا ساتھ دینے مچل اسٹارک آئے اور دونوں کھلاڑیوں نے وکٹ پر رک کر زیادہ سے زیادہ رنز بنانے کی کوشش کی۔

 دونوں کھلاڑیوں نے 8ویں وکٹ کی شراکت میں 51رنز بنائے جس کی بدولت آسٹریلیا کی ٹیم 200رنز کا ہندسہ عبور کرنے میں کامیاب رہی۔ اس شراکت کا خاتمہ اس وقت ہوا جب اسمتھ 85رنز کی شاندار اننگز کھیلنے کے بعد رن آؤٹ ہو گئے جبکہ اگلی ہی گیند پر کرس ووکس نے اسٹارک کی 29رنز کی اننگز کا خاتمہ کردیا۔

اگلے اوور میں مارک وُڈ نے بہرن ڈورف کو آؤٹ کر کے آسٹریلیا کی اننگز کا خاتمہ کردیا۔ آسٹریلیا کی پوری ٹیم 49اوورز میں 223رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی۔ انگلینڈ کی جانب سے کرس ووکس اور عادم رشید تین، تین وکٹوں کے ساتھ سب سے کامیاب باؤلر رہے۔

ہدف کے تعاقب میں انگلش اوپنرز جیسن روئے اور بیئراسٹو نے اپنی ٹیم 124رنز کا آغاز فراہم ک کے میچ کو یک طرفہ بنا دیا۔2  اس میچ میں فتح کی بدولت انگلینڈ نے دفاعی چیمپیئن آسٹریلیا کو ورلڈ کپ سے باہر کردیا  اور 1992 کے ورلڈ کپ کے بعد پہلی مرتبہ فائنل کے لیے کوالیفائی کیا ہے۔

ورلڈ کپ کا فائنل اتوار 14 جولائی کو انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کی ٹیموں کے درمیان لارڈز کے تاریخی میدان میں کھیلا جائے گا۔

loading...