کراچی میں فائرنگ سے 2 پولیس اہلکار جاں بحق، وزیراعلیٰ نے نوٹس لے لیا

  • سوموار 17 / جون / 2019
  • 780

کراچی میں موٹر سائیکل پر سوار نامعلوم مسلح افراد نے ڈیوٹی پر جانے والے 2 پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں دونوں جاں بحق ہوگئے۔

واقعہ کراچی کے علاقے اورنگی ٹاؤن کے مصروف ترین علاقے نوری چوک کے قریب پیش آیا جہاں احمد علی اور اللہ دتہ نامی پولیس اہلکار ڈیوٹی پر جارہے تھے۔ دو موٹر سائیکلوں پر سوار 4 نامعلوم مسلح افراد نے پولیس اہلکاروں کو فائرنگ کا نشانہ بنایا۔ وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوئے۔

حملہ آور فائرنگ کرنے کے بعد باآسانی جائے وقوع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے جبکہ پولیس حکام نے واقعے کو ٹارگٹ کلنگ قرار دے دیا ہے۔ کراچی پولیس چیف ڈاکٹر امید شیخ نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے فوری تحقیقات کا حکم دے دیا جبکہ پولیس نے مختلف زاویوں سے تفتیش کا آغاز کردیا ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے بھی واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے اس کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔  وزیراعلی سندھ نے مقتول پولیس اہلکاروں کے اہلخانہ سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے کہا کہ 'شہید پولیس اہلکاروں کے خاندان کو تنہا نہیں چھوڑیں گے'۔  انہوں نے قاتلوں کی فوری گرفتاری کی ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ 'پولیس سپاہیوں کے قاتلوں سے آہنی ہاتھوں سے نمٹیں گے'۔

ڈپٹی انسپکٹر جنرل غربی ڈاکٹر محمد امین یوسفزئی نے کہا ہے پولیس اہلکاروں کا قتل ٹاگٹ کلنگ معلوم ہوتی ہے۔ تاہم اس سے متعلق پہلے کوئی مخصوص تھریٹ الرٹ نہیں تھا۔ انہوں نے کہا کہ واقعے سے متعلق بتایا کہ جائے وقوع سے نائن ایم ایم کی گولیوں کے 4 خول ملے ہیں جنہیں فارنزک کے لیے بھیجا جارہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں اہلکار پولیس ٹریننگ سینٹر سعید آباد سے مومن آباد تھانے جارہے تھے۔

پولیس افسر نے  پولیس اہلکاروں کے قتل کو پولیو مہم کے ساتھ جوڑنے کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ اس واقعے کو پولیو مہم کے ساتھ جوڑنا درست نہیں۔

loading...