کراچی میں آندھی و طوفان سے 2 بچوں سمیت 5 افراد جاں بحق

  • سوموار 15 / اپریل / 2019
  • 380

کراچی میں تیز ہواؤں اور گردوغبار کے نتیجے میں 5 افراد جاں بحق اور 35 زخمی ہوگئے۔ اطلاعات کے مطابق  تیز ہواؤں اور گردو غبار کی وجہ سے شہر میں متعدد مقامات پر درخت اور بجلی کے کھمبے اُکھڑ گئے۔ سڑکوں کو بحال کرنے کے لیے انتظامیہ نے امدادی سرگرمیوں کا آغاز کردیا ہے۔

ریسکیو حکام کے مطابق حاجی ابراہیم گوٹھ میں مکان کی چھت گرنے سے 5 سالہ لڑکی جاں بحق ہوگئی۔ اس کے علاوہ مزار قائد کے قریب پیپلز چورنگی پر درخت گرنے سے ایک اور بچہ جاں بحق ہوگیا۔

جناح پوسٹ گریجویٹ میڈیکل سینٹر  کے شعبہ حادثات کی سربراہ ڈاکٹر سیمی جمالی کا کہنا تھا کہ 36 زخمی افراد کو ہسپتال منتقل کیا گیا جن میں سے ایک گزشتہ رات دم توڑ گیا۔ لیاری کے علاقے چاکیواڑہ میں مدرسے کی چھت گرگئی جبکہ سرجانی ٹاؤن میں مکان اور دو اسکولوں کو نقصان پہنچا۔

کراچی کوئٹہ ہائے وے پر متعدد حادثات کے نتیجے میں 3 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے۔ رپورٹ کے مطابق تیز ہواؤں کی وجہ سے ایک پولیس وین، ایک مسافر بس اور ایک ٹرک حادثے کا شکار ہوا۔ مسافر بس کے تمام مسافر کوئٹہ سے کراچی آرہے تھے۔

پولیس اور لیویز اہلکاروں نے اپنی مدد آپ کے تحت زخمیوں کو قریبی ہسپتال منتقل کیا، انہیں طبی امداد دینے کے بعد کراچی ریفر کردیا گیا۔

وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کراچی کے تمام ڈویژنل کمشنرز کو ہدایات جاری کیں کہ وہ موجودہ حالات میں خصوصی انتظامات کریں۔ انہوں نے کچے مکانوں میں رہنے والوں کو خبردار کیا کہ شہر میں موجودہ صورت حال کے باعث حفاظتی اقدامات کریں۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے میونسپل انتظامیہ کو ہدایت جاری کیں کہ وہ کسی بھی ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لیے اقدامات اٹھائیں اور ڈپٹی کمشنرز کو ان کی بھرپور مدد کی ہدایت بھی کی۔

سندھ کے صوبائی دارالحکومت کراچی میں تیز ہواؤں کے بعد موسم خوشگوار ہوگیا جبکہ  پیر اور منگل شہر میں بارش کا امکان بھی ظاہر کیا گیا ہے۔

loading...