’اندرونی خطرات بڑے، چھٹی حس کہہ رہی ہے کچھ ہونے والا ہے، گریٹر پلان بنتا نظر آ رہا ہے‘

’اندرونی خطرات بڑے، چھٹی حس کہہ رہی ہے کچھ ہونے والا ہے، گریٹر پلان بنتا نظر آ رہا ہے‘(ayaz-sadiq-media-talk)

اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کہتے ہیں کہ ناامیدی اور مایوسی گناہ ہے لیکن میں پہلی بار سیاست میں مایوس ہوا ہوں۔ اندرونی خطرات بیرونی خطرات سے کہیں زیادہ بڑے ہیں۔

ملک میں جاری تناوٴ کی صورتحال پر اسپیکرقومی اسمبلی ایاز صادق کا کہنا تھا ہمیں بھی اس ملک میں رہنا ہے اور ہماری نسلوں کو بھی۔ جو کچھ ملک میں ہو رہا ہے اسے دیکھ کر دکھ ہوتا ہے،وہ کسی ادارے نہیں پورے ملک کے لیے اچھا نہیں۔ حکومت، ساری اپوزیشن کی خواہش ہے حکومت مدت پوری کرے سوائے ایک جماعت کے۔ اسپیکر قومی اسمبلی نے خدشہ ظاہر کیا کہ مجھے ایک گریٹر پلان بنتا نظر آ رہا ہے۔ آپ نے دیکھا نہیں کہ پچھلے تین مہینوں میں پاکستان میں کیا ہوا۔ یہ چیزیں نارمل نہیں ہیں غیر فطری ہیں۔ پاکستان کے اوپر نظریں ہیں اور ملک دشمنوں میں گھرا ہوا ہے۔ سردار ایاز صادق کا کہنا ہے کہ چھٹی حس کہہ رہی ہے کچھ ہونے والا ہے لیکن سمجھ نہیں آرہا کہ کیا ہونے والا ہے۔ سیاسی جماعتوں کو کہتا رہتا ہوں کہ بہتری کے لیے ضروری ہے نظام کو مستحکم کریں۔ ہر بات پوچھی نہیں جاتی کچھ باتیں سمجھی جاتی ہیں۔

’پاک فوج فاٹا کو قومی دھارے میں لانے کے حق میں ہے‘(army-chief-address)

’پاک فوج فاٹا کو قومی دھارے میں لانے کے حق میں ہے‘

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ پاک فوج فاٹا کو قومی دھارے میں لانے کے حق میں ہے جب کہ قیام امن کے لئے قبائلی عوام کی قربانیاں رنگ لارہی ہیں۔

مذہبی جماعتوں کا متحدہ مجلس عمل کی بحالی کا فیصلہ(mma-meeting)

مذہبی جماعتوں کا متحدہ مجلس عمل کی بحالی کا فیصلہ

کراچی: مذہبی جماعتوں نے متحدہ مجلس عمل کو بحال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اگلے سال کے آغاز میں بھرپور عوامی رابطہ مہم شروع کی جائے گی۔

مقبوضہ بیت المقدس کو فلسطینی دارالحکومت تسلیم کرنے کا مطالبہ(oic-meeting)

مقبوضہ بیت المقدس کو فلسطینی دارالحکومت تسلیم کرنے کا مطالبہ

استنبول: امریکہ کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کے اعلان کی اسلامی تعاون تنظیم نے شدید مذمت کی ہے۔

 

loading...

ملک میں جمہوریت کا اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا

جولائی میں سپریم کورٹ کی طرف سے نواز شریف کو نااہل قرار دیئے جانے کے فیصلہ کے بعد سے دو ایسے معاملات سامنے آئے ہیں جن کے ملک میں جمہوری روایت کو استوار کرنے کے حوالے سے دور رس اثرات مرتب ہو سکتے ہیں۔ آنے والے دنوں میں  جمہوریت نواز اور جمہوریت کو ملک کے مفادات کے لئے بوجھ سمجھنے والے عناصر کے درمیان معرکہ آرائی دیکھنے میں آئے گی۔ یہ ایک ایسا سخت تصادم ہے کہ یہ اندازہ قائم کرنا محال ہے کہ فتح کس کی ہوگی۔ گو کہ ملک میں جمہوری نظام کے تسلسل کے حوالے سے کسی قسم کا کوئی اختلاف موجود نہیں ہے لیکن جمہوریت زندہ باد کہنے کے بعد اگر مگر کے ساتھ ایسا سماں باندھا جاتا ہے کہ جمہوریت کی روح فنا ہونے لگتی ہے۔ اس ماحول میں یہ کہنا بھی ضروری ہے کہ حقیقی معنوں میں جمہوریت کا تسلسل چاہنے والے نہ تو اس وقت برسر اقتدار ہیں اور نہ ہی مستقبل قریب میں ملکی معاملات پر ان کی گرفت مضبوط ہونے کا امکان موجود ہے۔ یہ ایک چھوٹا سا گروہ ہے جو اصولی طور پر یہ سمجھتا ہے کہ ملک کو آگے لے جانے کے لئے جموہریت سے بہتر کوئی طریقہ کار نہیں ہو سکتا۔ کیوں کہ ایک تو یہ طریقہ عوام کی نمائیندگی کا بہترین پیمانہ قرار پایا ہے، دوسرے ملک میں غیر جمہوری طریقہ سے معاملات چلانے اور فوجی حکومتوں کے ذریعے مسائل کا حل تلاش کرنے کا طریقہ ناکام ہو چکا ہے، تیسرے اب مطلق العنانیت کی قبولیت کا وقت گزر چکا ہے۔ اس لئے جو عناصر جمہوریت کو مسائل کا حل سمجھنے کی بجائے یہ یقین رکھتے ہیں کہ اس سے مشکلات میں اضافہ ہوتا ہے، وہ بھی اب یہ کہنے پر مجبور ہیں کہ پاکستان میں جمہوریت کے سوا کوئی نظام کامیاب نہیں ہو سکتا۔

سب سے دور اور سب سے بڑا  بلیک ہول دریافت(super-big-black-hole-from-early-universe-farthest-ever-found)

سب سے دور اور سب سے بڑا بلیک ہول دریافت

ماہرینِ فلکیات نے ایک ایسا بلیک ہول دریافت کیا ہے جو سائز میں بہت بڑا اور فاصلے کے لحاظ سے ہم سے بہت دور واقع ہے۔ اس دریافت کے بارے میں سائنسدان آج سے پہلے کچھ بھی نہیں جانتے تھے۔

Growing dangers of Islamist radicalism on Pakistani politics

Mr Arshad Butt is an insightful observer of the political events in Pakistan. Even though the hallmark of Pakistani political developments and shabby deals defy any commo

Read more

loading...